سعودی سرحد پرمتعین پانچ بحرینی فوجی جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی جنوبی بارڈر پر متعین بحرینی فوج کے پانچ اہلکار جاں بحق ہوگئے ہیں۔ بحرین کی مسلح افواج کی جانب سے جاری ایک بیان میں اپنے پانچ فوجیوں کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ پانچوں سرحدی محافظ یمن کی سرحد سے متصل علاقے میں اپنی ڈیوٹی سرانجام دیتے ہوئے جام شہادت نوش کرگئے ہیں۔

بحرین کی سرکاری خبر رساں ایجنسی "بنا" نے مسلح افواج کی جانب سے جاری کردہ بیان نقل کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ فوج کے پانچ بہادر سپاہی پڑوسی ملک کی سرحدوں کے دفاع کے مقدس فریضے کی ادائی کے دوران دشمن کے خلاف داد شجاعت دیتے ہوئے جام شہادت نوش کرگئے ہیں۔ مارے جانے والے فوجیوں کی شناخت فرسٹ لیفٹیننٹ محمد نبیل حمد، سارجنٹ محمد حافظ یونس، عبدالقادر حسن المعلص، حسن اقبال محمد اور العریف عبدالمنعم علی حسین کے ناموں سے کی گئی ہے۔

سعودی عرب کی سرحد پر بحرینی فوجیوں کی ہلاکت کا سبب معلوم نہیں ہوسکا۔ تاہم بحرین کے وزیرخارجہ الشیخ خالد بن احمد آل خلیفہ نے "العربیہ" نیوزچینل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کی سرحد پر پیش آیا حادثے یمن میں دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں ان کے عزم کو کمزور نہیں کرسکتا۔ انہوں نے فوجیوں کی ہلاکت کو بحرین کے لیے صدمہ قراردیا۔

خیال رہے کہ بحرینی فوجیوں کی ہلاکت کا یہ واقعہ ایک ایسے وقت میں پیش آیا ہے جب گذشتہ روز یمنی باغیوں کی طرف سے داغے گئے زمین سے زمین پرمار کرنے والے میزائل حملے میں 45 اماراتی فوجی ہلاک اوردرجنوں زخمی ہوگئے تھے۔

رواں سال مارچ میں یمن میں باغیوں کے خلاف شروع ہونے والی لڑائی میں اتحادی ممالک میں شامل متحدہ عرب امارات کو پہلی بار اتنے بڑے جانی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ یمن کی حکومت نواز مزاحمتی رابطہ کمیٹیوں نے متحدہ عرب امارات اور یمن کے فوجیوں کی حوثی باغیوں کے حملوں میں ہلاکت پر گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔ مزاحمت کاروں کا کہنا ہے کہ حوثیوں کی دہشت گردی کے نتیجے میں مارے جانے والے اماراتی اور بحرینی فوجیوں کا خون رائیگاں نہیں جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں