یمن: اسلحہ گودام میں دھماکے سے 10 سعودی فوجی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن کے مآرب شہرمیں گذشتہ روز ایک اسلحہ گودام میں ہونے والے دھماکے کے نتیجے میں کم سے کم 10 سعودی فوجی جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوئے۔

یمن میں سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے جاری آپریشن کے ترجمان جنرل احمد عسیری نے بتایا کہ مارب کے مقام پر اسلحہ کے ایک گودام میں اچانک ہونے والے دھماکوں کے نتیجے میں کم سے کم دس سعودی سپاہی شہید ہوئے ہیں۔ دھماکوں میں متعدد فوجی زخمی ہوئے، جن میں سے بیشتر کی اسپتال میں مرہم پٹی کے بعد انہیں ڈسچارج کر دیا گیا ہے۔

دوسری جانب یمن میں اتحادی ممالک کے "بحالی امید" آپریشن کے تحت باغیوں کے ٹھکانوں پر فضائی اور زمینی حملے جاری ہیں۔ بعض مقامات پر بری فوج اور حکومت نواز ملیشیا نے فاتحانہ پیش قدمی کی ہے۔ صنعاء کے قریب فج عطان میں میزائل اڈے، اسپیشل کمانڈو فورس کے ہیڈ کواٹر، بریگیڈ فرسٹ کے ہیڈ کواٹر اور حوثیوں کے زیر تسلط جامعہ الایمان پر جنگی طیاروں کے ذریعے بمباری کی گئی اور دشمن کو بھاری جانی نقصان سے دوچار کیا گیا۔

شمالی صنعاء میں بھی حوثیوں کے متعدد اسلحہ ڈپو اور فوج کے مراکز اور ھمدان گورنری کو بھی بمباری سے نشانہ بنایا گیا۔

تعز شہر میں الجحملیہ کے مقام پر فضائی بمباری کے ساتھ ساتھ مزاحمتی تنظیموں نے ملٹری اسپتال، مشرق کی جانب سے کلابہ کالونی اور اس کے مضافات سے پیش قدمی کی ہے۔ فضائی بمباری میں تعز میں ری پبلیکن گارڈز کے ایک ہیڈ کواٹر، علی صالح کی حامی ملیشیا اور حوثیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کرکے دشمن کے دسیوں اہلکار ہلاک اور زخمی کیے ہیں۔

ذرائع کے مطابق یمن کے دارالحکومت صنعاء میں باغیوں کو شکست فاش سے دوچار کرنے کے لیے فضائی اور زمینی حملوں میں غیرمعمولی شدت لائی جا رہی ہے۔ جنگ کی صورت حال پر نظر رکھنے والے ماہرین کا کہنا ہے جہ باغیوں کے حملے میں متحدہ عرب امارات کے پینتالیس فوجیوں کی ہلاکت کے بعد اتحادی ممالک حوثی باغیوں کے خلاف سخت کارروائی کرنے والے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں