.

یمنی فورسز کا مآرب پر دوبارہ کنٹرول کے لیے آپریشن

حوثی باغی عرب اتحاد کے طیاروں کی بمباری کے بعد بعض علاقوں سے پسپا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز نے وسطی صوبے مآرب کا کنٹرول دوبارہ حاصل کرنے کے لیے ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے خلاف ایک بھرپور کارروائی کا آغاز کیا ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی قیادت میں اتحاد نے اتوار کی صبح اس نئی کارروائی کا آغاز کیا ہے۔اس میں یمنی فوج اور ان کے حامی عوامی مزاحمت سے تعلق رکھنے والے جنگجو حصہ لے رہے ہیں۔اتحادی طیاروں کی تباہ کن بمباری کے بعد حوثیوں نے مآرب کے بعض علاقوں کو خالی کردیا ہے۔

مآرب کے شمال میں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کے جنگجوؤں کے حملے میں متعدد حوثی باغی مارے گئے ہیں۔درایں اثناء ساحلی شہر حدیدہ میں بھی عرب اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے حوثی ملیشیا کے ٹھکانوں کو اپنے حملوں میں نشانہ بنایا ہے۔اس بمباری میں ان کے سات جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق اتحادی طیاروں نے یمن کے وسطی صوبے البیضاء میں بھی حوثیوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی ہے۔

سعودی عرب کی قیادت میں اتحادی ممالک کے لڑاکا طیارے 26 مارچ سے یمن میں حوثی شیعہ باغیوں اور ان کے اتحادی سابق صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار فوجیوں کے خلاف فضائی حملے کررہے ہیں۔اسی فضائی مہم کی بدولت یمن کے جنوبی شہروں میں صدر منصور ہادی کی وفادار فورسز کو حوثیوں اور ان کے اتحادیوں کو پسپا کرنے میں مدد ملی ہے اور اب وہ وسطی اور شمالی شہروں کی جانب بڑھ رہے ہیں۔