علماء کونسل کا قبلہ اول کے خلاف صہیونی جارحیت بند کرانے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

#سعودی_عرب کی #علماء_کونسل نے #مسجد_اقصیٰ [قبلہ اول] میں اسرائیلی فوج کی نمازیوں اور معتکفین پر وحشیانہ تشدد اور مقدس مقام کی بے حرمتی کی شدید مذمت کرتے ہوئے عالم اسلام سے اسرائیلی فوج گردی کے خلاف موثر اقدامات کا مطالبہ کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کی علماء کونسل کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مسجد اقصیٰ کے احاطے اور تاریخی مقام جامع القبلی میں اعتکاف میں بیھٹے فلسطینیوں پر وحشیانہ تشدد، ان پر لاٹھی چارج اور اشک آور گیس کی شیلنگ کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے غیر انسانی اور غیر اخلاقی قرار دیتے ہوئے ان کی روک تھام کے لیے موثر اقدامات کا مطالبہ کیا گیا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی، نہتے اور پرامن نمازیوں پر تشدد کے بعد عالم اسلام کی طرف سے خاموش رہنے کا کوئی جوازنہیں۔ اسرائیلی فوج کی کارروائیوں کےخلاف عالم اسلام اور عالمی برادری انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں کو فوری اورموثر اقدامات کرنا ہوں گے۔ فلسطینی شہریوں، مسجد اقصیٰ میں آنے والے نمازیوں اور مقام معراج کی زیارت کرنے والوں کو ہرممکن تحفظ فراہم کرنا ہوگا۔

بیان میں عالم اسلام کی جانب سے قبلہ اول کے دفاع اور فلسطینی شہریوں کے تحفظ کے لیے خاطر خواہ اقدامات نہ کیے جانے پر افسوس کا اظہار کیا گیا اور کہا گیا ہے کہ مسلمانوں کے قبلہ اول کے خلاف صہیونی مظالم ایک ایسے وقت میں جاری ہیں جب فرزندان توحید اس وقت حج بیت اللہ کے سرزمین حرمین شریفین کا قصد کررہے ہیں۔ صہیونی فوج کے فلسطینیوں کے خلاف مظالم اور مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کے شرمناک واقعات سے پورے عالم اسلام میں سخت غم وغصے کی فضاء پائی جا رہی ہے۔ ناپاک صہیونیوں کے ہاتھوں فلسطینی مقدسات کا دفاع نہ کیا گیا تو مسلم دنیا کا رد عمل مزید سخت ہوسکتا ہے۔ سعودی علماء کونسل نے مسجد اقصیٰ کے دفاع کے لیے آنے والے فلسطینیوں کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے مسلم امہ سے فلسطینیوں کی ہرممکن مدد کا مطالبہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں