نجران میں سعودی فوج کے ہاتھوں دسیوں حوثی باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

#سعودی_عرب کی بری فوج نے #یمن کے سرحدی علاقے #نجران سے یمن کے اندر گھس کر #حوثی باغیوں کے خلاف آپریشن میں درجنوں جنگجوئوں کو ہلاک اور دسیوں کو حراست میں لے لیا ہے۔

العربیہ چینل کے ذریعے کے مطابق اتحادی فوج کو وسطی یمن میں #مآرب کے مقام پر بھی غیرمعمولی کامیابی حاصل ہوئی ہے اور شمالی اور مغربی محاذوں پر اپاچی ہیلی کاپٹروں کی بمباری کے ساتھ ساتھ شہر کے اہم مقامات سے حوثی باغیوں کو نکال باہر کیا گیا ہے۔

#تعز میں بھی گھمسان کی لڑائی کی اطلاعات ہیں۔ مزاحمتی فورسز نے حوثیوں اور علی صالح کی وفادار ملیشیا کے مشترکہ حملے پسپا کرتے ہوئے دشمن کو بھاری جانی نقصان سے دوچار کیا ہے۔

یمن میں فوجی محاذ پر گرما گرمی کے ساتھ ساتھ مسئلے کے سیاسی حل کے لیے بھی کوششیں ایک بار پھر تیزہوگئی ہیں۔ #اقوام_متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی مندوب اسماعیل ولد الشیخ احمد آج دوبارہ ریاض پہنچ رہے ہیں جہاں وہ سعودی اور یمنی قیادت سے بات چیت کریں گے۔ بعد ازاں ان کی مسقط میں حوثی باغیوں کے نمائندوں سے ملاقات بھی متوقع ہے۔ ان ملاقاتوں کا مقصد یمن میں جاری بحران کے سیاسی حل کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنا ہے۔ یمن کی جلا وطن حکومت کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی قرار داد 2216 کے دائرے میں رہتے ہوئے بات چیت کے لیے تیار ہے۔ بشرطیکہ فریق ثانی بھی اسی قرارداد کے اندر رہتے ہوئے بات چیت کرنے پرآمادگی کا اظہار کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں