سعودی عرب میں حج کے موقع پر قومی دن کی تقریبات

سعودی شہری پہلی مرتبہ قومی دن کے ایک روز بعد عیدالاضحیٰ منائیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں آج تراسویں قومی دن کی تقریبات روایتی جوش وخروش سے منائی جارہی ہیں جبکہ آج ہی لاکھوں حجاج کرام میدانِ عرفات میں حج کے رکنِ اعظم وقوف کے لیے جمع ہیں۔

سعودی عرب کے مرحوم بانی شاہ عبدالعزیزآل السعود نے 23 ستمبر 1932ء کو ملک کے اتحاد اور سعودی مملکت کے قیام کا اعلان کیا تھا۔حسن اتفاق سے قومی دن کے ایک روزبعد جمعرات کو عیدالاضحیٰ منائی جارہی ہے۔

سعودی شہری قومی دن اور عیدالاضحیٰ کے ساتھ ساتھ آنے کو نیک شگون خیال کررہے ہیں۔انگریزی زبان کے استاد فہدالشہری نے العربیہ نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''اس صورت حال میں تو خوشیاں دوبالا ہوگئی ہیں۔ایک ہی موقع پر دونوں قومی ایام آنے سے ان کے منانے میں وقت کی بچت ہوگی اور اس کے علاوہ الگ الگ قومی دن اور عید منانے میں ہونے والے مصارف کی بھی بچت ہوسکے گی''۔

انھوں نے کہا کہ وہ قومی دن کو اپنے انداز میں مناتے ہیں اور وہ اپنے طلبہ پرہمیشہ یہ زوردیتے ہیں کہ وہ اس موقع کو تعمیری اور مناسب انداز میں منائیں۔

سعودی میڈیا کی ایک شخصیت عبداللہ آل السماری سے جب یہ سوال کیا گیا کہ اگر قومی دن اور عید ایک ہی دن میں پڑیں تو وہ اس کو کیسے منائیں گے تو ان کا کہنا تھا کہ ''یہ ایک اچھا موقع ہے کہ قومی دن اور عیدالفطر یا عیدالاضحیٰ کے ساتھ ہی آئے ہیں کیونکہ ہم عید کو مسلمانوں کے لیے خوشیوں کے ایک تیوہار کے طور پر منائیں گے اور اس ملک کے قومی دن کو بھی ایک عید کے طور پر منائیں گے اور اپنے وطن سے اپنی عقیدت کا اظہارکریں گے''۔

علم فلکیات کے اعدادوشمار کے مطابق سعودی عرب کی تاریخ میں اس سے قبل کبھی عیدالفطر یا عیدالاضحیٰ اور قومی دن اکٹھے نہیں آئے ہیں اور مستقبل میں بھی جلد ان کے اکٹھے رونما ہونے کا امکان نہیں ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں