یمنی صدر کی ملک واپسی پر باغی بائولے ہوگئے

عوامی حلقوں کا منصور ھادی کی واپسی کا خیرمقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

#یمن کے صدر عبد ربہ #منصور_ھادی کی #عدن واپسی ایران نواز #حوثی باغیوں اور سابق منحرف صدر علی #عبداللہ_صالح اور ان کے وفاداروں کے لیے سخت پریشانی کا موجب بنی ہے اور وہ ہسٹیریا کا شکار ہوگئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق #صنعاء اور دوسرے علاقوں میں موجود باغیوں نے صدر عبد ربہ منصور ھادی کی ملک واپسی پرسخت بےچینی کا اظہار کیا ہے۔ صدر کی واپسی پر باغیوں کا رد عمل دیکھنے کے قابل ہے۔ ایسے لگ رہا ہے کہ صدر منصور ھادی کی عدن آمد پر حوثی باغی اور علی صالح کے وفادار پاگل ہوگئےہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو اپنے ذریعے سے اطلاع ملی ہے کہ صدر عبد ربہ منصور ھادی کی سعودی عرب سے عدن آمد کے بعد حوثی باغیوں اور علی صالح کے حامیوں نے صدر کی واپسی کے بعد کا لائحہ عمل مرتب کرنے کے لیے ہنگامی اجلاس منعقد کرنا شروع کیے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر منصور ھادی کی عدن واپسی باغیوں کے لیے ناقابل یقین ہے۔ بالخصوص صدر کی جانب سے باغیوں کے ساتھ کسی قسم کی مفاہمت اور مذاکرات نہ کرنے کے اعلان کے بعد باغیوں میں خوف کی کیفیت پائی جا رہی ہے۔

دوسری جانب صدر ھادی کی وطن واپسی کے نتیجے میں آئینی حکومت کی بحالی کے لیے محاذ جنگ پڑ لڑنے والی فورسز کو ایک نیا حوصلہ اور ولولہ ملا ہے۔ عوام کی بھاری اکثریت نے صدر کی وطن واپسی کا خیر مقدم کرتے ہوئے اطیمنان کا اظہار کیا ہے۔

یمن میں نوجوانوں کے نمائندہ ایک سماجی کارکن محمد عبدالستار کا کہنا ہے کہ صدر کی وطن واپسی عوام کی امنگوں کی ترجمانی ہے۔ صدر ھادی کی عدن آمد پر پوری قوم خوش ہے۔ عوام کو توقع ہے کہ صدر کی آمد کے بعد بغاوت ختم کرنے کے لیے جاری لڑائی جلد منطقی انجام تک پہنچ پائے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں