.

انڈونیشیا میں شدید زلزلہ ،60 سے زیادہ افراد زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انڈونیشیا کے دور دراز مشرقی علاقے میں جمعہ کو علی الصباح شدید زلزلے کے نتیجے میں ساٹھ سے زیادہ افراد زخمی اور دو سو مکانات جزوی یا مکمل طور پر تباہ ہوگئے ہیں۔

انڈونیشی حکام کے مطابق پاپوا کے علاقے میں مقامی وقت کے مطابق رات ایک بجے 6.6 کی شدت کا زلزلہ آیا تھا۔اس کا مرکز سمندر کی تہ میں تھا۔یہ علاقہ ساحلی شہر سورونگ کے نزدیک واقع ہے۔زلزلے کے بعد گھروں میں سوئے ہوئے لوگ سراسیمہ ہوکر باہر نکل آئے اور افراتفری کے عالم میں ادھر ادھر بھاگنا شروع ہوگئے۔

امریکا کے جیالوجیکل سروے نے ریختر سکیل پر زلزلے کی شدت 6.6 بتائی ہے اور اس کا مرکز چوبیس کلومیٹر گہرائی میں تھا۔انڈونیشیا کے محکمہ قومی آفات کے ترجمان سوٹوپو پروو نگروہو نے کہا ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں سترہ افراد شدید زخمی ہوئے ہیں اور انھیں اسپتال منتقل کردیا گیا ہے جبکہ پینتالیس افراد معمولی زخمی ہوئے ہیں۔ابھی تک کسی ہلاکت کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

زلزلے کے بعد سورونگ شہر میں برقی رو معطل ہوگئی اور شہر کے ایک اسپتال سے زخمیوں کو منتقل کرنا پڑا ہے۔ترجمان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ''ہم ابھی اعداد وشمار اکٹھے کررہے ہیں اور زخمیوں کی تعداد اور مالی نقصانات بڑھنے کا اندیشہ ہے''۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا بحرالکاہل کے دھانے پر واقع ہے اور یہاں ٹیکٹانک پلیٹیں اکثر ٹکراتی رہتی ہیں جس کے نتیجے میں شدید زلزلے آتے ہیں اور آتش فشاں بھی پھوٹتے رہتے ہیں۔جولائی میں پاپوا کے علاقے ہی میں 7.0 کی شدت کا زلزلہ آیا تھا جس کے نتیجے میں ایک لڑکا دریا میں گر کر ڈوب مرا تھا اور متعدد عمارتوں کو نقصان پہنچا تھا۔

یادرہے کہ 2004ء میں انڈونیشیا کے مغربی جزیرے سماٹرا میں واقع صوبہ آچے میں زیرسمندر زلزلے کے نتیجے میں سونامی طوفان آگیا تھا اور اس میں ایک لاکھ ستر ہزار سے زیادہ انڈونیشی ہلاک ہوگئے تھے۔بحرہند کے کنارے آباد دوسرے ممالک میں ہزاروں افراد بھی سونامی کے نتیجے میں ہلاک اور زخمی ہوگئے تھے۔