داعش نے بنگلہ دیش میں اطالوی شہری قتل کر ڈالا

ڈھاکہ میں داعش کی پہلی خونی واردات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ عراق وشام #داعش نے #بنگلہ_دیش میں سرگرم ایک امدادی کارکن کو گولیاں مار کر قتل کرڈالا۔ #ڈھاکہ میں داعش کے ہاتھوں کسی شخص کے قتل کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ڈھاکہ پولیس کےترجمان منتصر اللہ اسلام نے غیرملکی خبر رساں ادارے سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ تین نامعلوم مسلح افراد نے ایک 50 سالہ اطالوی امدادی کارکن کو گولیاں ماریں جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوا۔ زخمی غیر ملکی شہری کو ایک مقامی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہوگیا۔

ترجمان کے مطابق یہ واقعہ سوموار کے روز ڈھاکہ میں ڈپلومیٹک انکلیو میں پیش آیا۔ تینوں حملہ آور موٹر پر سوار تھے جو فائرنگ کے بعد جائے وقوعہ سے فرار ہوگئے تھے۔ دوسری جانب داعش نے اس واقعے کے ذمہ داری قبول کی ہے۔

مقتول کا تعلق ایک بین الاقوامی ترقیاتی ادارے کے ساتھ تھا اور وہ کچھ عرصے سے ادارے کے بنگلہ دیش میں قائم دفتر میں تعینات تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں