.

فرانس کے شام میں داعش پر پہلے حملے میں 30 ہلاکتیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے لڑاکا طیاروں کے شام میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے ٹھکانوں پر پہلے فضائی حملے میں کم سے کم تیس افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

فرانسیسی صدر فرانسو اولاند کے دفتر نے اتوار کو شام کے مشرقی شہر دیر الزور اور داعش کے زیر قبضہ دوسرے علاقوں پر پہلے فضائی حملے کی اطلاع دی تھی۔ فرانسیسی طیاروں نے داعش کے تربیتی اہداف کو بمباری میں نشانہ بنایا تھا۔

فرانسیسی طیارے 8 ستمبر سے شام میں داعش کے ٹھکانوں کی فضائی نگرانی کے لیے پروازیں کررہے تھے۔ان کے شناختہ اہداف پر لڑاکا طیاروں نے بم برسائے تھے۔

فرانسیسی صدر کے بیان کے مطابق ''دہشت گردی کے خطرے سے لڑائی'' کے نام سے اس آپریشن کو علاقائی شراکت داروں کے ساتھ رابطے کے بعد شروع کیا گیا ہے اور ہم اپنی قومی سلامتی کو درپیش کسی بھی خطرے کی صورت میں کسی بھی وقت حملہ کرسکتے ہیں۔

فرانس نے اسی ماہ کے اوائل میں اپنے دفاع کے نام پر داعش کے خلاف فضائی حملوں کا اعلان کیا تھا۔تاہم اس نے واضح کیا تھا کہ جنگ زدہ ملک کے اندر زمینی کارروائیاں نہیں کی جائیں گی۔قبل ازیں فرانس کے لڑاکا طیارے پڑوسی ملک عراق میں امریکا کی قیادت میں داعش کے خلاف فضائی مہم میں شریک تھے۔