.

یمن کے شہر تعز میں بھاری فوجی کمک پہنچ گئی

مشترکہ فوج کی مارب کے الاشراف علاقے کی جانب پیش قدمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

باخبر یمنی ذرائع نے عرب اتحادی فوج کی جانب سے ارسال کردہ فوجی ساز وسامان اور سپاہ پر مشتمل کمک #تعز شہر کے مشرقی محاذ پر بھجوانے کی تصدیق کی ہے۔ اس ضمن میں #الوازعیہ ڈائریکٹوریٹ کا علاقہ خصوصی طور پر شامل ہے جہاں پر باغیوں کے ساتھ خونریز جھڑپیں ہوئیں۔ تعز کے متعدد علاقوں کا کںڑول #یمن کی قومی فوج کے ہاتھ آنے کی اطلاعات کے تناظر میں سرکاری فوج کے اہلکار، ٹینک اور آرمڈ گاڑیاں کرش محور سے تعز پہنچیں ہیں۔

اس پیش رفت کے ساتھ دوسری جانب اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے #صنعاء میں صدارتی کمپاؤنڈ اور الصمع کیمپ پر حملہ کیا۔ دارلحکومت کے شمال میں ارحب سے تعلق رکھنے والے ایک #حوثی کمانڈر کے گھر پر اتحادی فوج نے حملہ کیا۔ اتحادیوں نے البیضاء کے علاقے میں واقع سپیشل ٹاسک فورس کے فوج کے کیمپ اور کھیل کے ایک میدان کو بھی اپنے فضائی حملوں کا خصوصی ہدف بنائے رکھا۔

عرب اتحادی فوج کے آبنائے باب المندب پر کنڑول سے یمنی میدان جنگ میں انہیں قابل ذکر برتری حاصل ہو گئی ہے۔ اس کامیابی کے جلو میں متعدد حوثی رہنماؤں کے ہتھیار ڈالنے کی اطلاعات ہیں جبکہ اتحادی فوج کی ارسال کردہ بھاری فوجی کمک تعز کے مشرقی اور مغربی محاذوں پر پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔

عوامی مزاحمت کاروں نے تعز کے علاقے الوازعیہ الساحلیہ کے گرد حصار سخت کر دیا ہے۔ ذرائع نے امید ظاہر کی ہے کہ باغی ملیشیا اور مزاحمت کاروں کے درمیان جاری شدید جھڑپیں جلد ہی پورے علاقے پر سرکاری فوج کے قبضے کی راہ ہموار کر دیں گی۔