.

تعز میں اتحادی طیاروں کی کارروائی، 27 یمنی باغی ہلاک

اتحادی طیاروں کی تعز، صنعاء اور صعدہ میں باغی ٹھکانوں پر بمباری تیز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے شہروں صنعاء، تعز اور صعدہ میں اتحادی طیاروں کی بمباری سے حوثی ملیشیا اور منحرف صدر علی عبداللہ صالح کے 27 جنگجو ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔

عوامی مزاحمت کاروں کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کے جنگجوؤں نے راس شہر کے مغربی حصہ مزاحمت کاروں سے آزاد کرا لیا ہے۔ لڑائی میں باغیوں کے متعدد کارکن ہلاک ہو زخمی ہوئے۔

ادھر باغی جنگجوؤں نے تعز کی ثعبات، الحمہودی، الموشکی اور الروضہ کالونیوں پر شدید گولا باری کی ہے جس کے نتیجے میں میڈیکل ذرائع کے مطابق بڑی تعداد میں عام شہریوں کا جانی اور مالی نقصان ہوا ہے۔

درایں اثنا عوامی مزاحمت کاروں نے مآرب شہر کا کنڑول حاصل کرنے پر جشن منایا۔ سرکاری اور اتحادی فوج کو علاقے میں باغیوں کے خلاف ملنے والی کامیابی کے بعد علاقے میں سیکیورٹی اور شہری سہولیات کی فراہمی کا سلسلہ دوبارہ شروع ہو گیا ہے۔ مآرب کا گیس اسٹیشن نے چھ مہینے بند رہنے کے بعد دوبارہ کام شروع کر دیا ہے۔ اسی طرح مقامی ہسپتال کے تمام شعبوں نے بھی کام کا آغاز دوبارہ کر دیا ہے۔ یمنی حکومت نے 314 کور کو عوامی اور سرکاری عمارتوں کی سیکیورٹی کی ذمہ داری سونپی ہے۔

ملکہ سبا کے محل کے قریب 314 کور کی ایک بریگیڈ نے مآرب کے پرانے شہر میں سرکاری عمارتوں کی حفاظت کے لئے اپنا ہیڈکوارٹر بنا لیا ہے جہاں سے وہ الفاو اور المنین جیسے پرانے علاقوں کا دفاع کریں گے۔