.

کینیڈا نے داعش مخالف مہم میں شریک طیارے واپس بلا لیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کینیڈا کے نومنتخب وزیراعظم جسٹن ٹروڈیو نے عراق اور شام میں سخت گیر جنگجو گروپ داعش کے خلاف فضائی مہم میں شریک اپنے لڑاکا طیارے واپس بلانے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ انھوں نے اس حوالے سے امریکی صدر براک اوباما کو مطلع کردیا ہے۔

ٹروڈیو نے منگل کی شب ایک نیوزکانفرنس میں بتایا ہے کہ ''میں نے صدر براک اوباما سے ٹیلی فون پر بات کی ہے اور ان پر واضح کیا ہے کہ کینیڈا داعش مخالف اتحاد کا ایک مضبوط رکن رہے گا لیکن میں نے جنگی مشن کے خاتمے کا وعدہ کیا تھا ،اس لیے لڑاکا طیارے واپس بلائے جارہے ہیں''۔

تاہم انھوں نے داعش کے خلاف فضائی مہم میں شریک کینیڈین طیاروں کی واپسی کا کوئی نظام الاوقات نہیں دیا ہے۔کینیڈا نے گذشتہ سال مشرق وسطیٰ کے خطے میں مارچ 2016ء تک اپنے سی ایف 18 لڑاکا جیٹ بھیجے تھے۔اس کے علاوہ اس نے شمالی عراق میں کرد جنگجوؤں کی تربیت کے لیے خصوصی فورسز سے تعلق رکھنے والے قریباً ستر فوجی بھی بھیجے تھے۔

ٹروڈیو نے حالیہ انتخابی مہم کے دوران لڑاکا جیٹ طیاروں کی کینیڈا واپسی اور جنگی مشن کے خاتمے کا وعدہ کیا تھا۔البتہ انھوں نے کہا تھا کہ فوجی ٹرینر وہیں موجود رہیں گے۔

انھوں نے کہا ہے کہ ان کی لبرل حکومت ذمہ دارانہ انداز میں انتخابی مہم کے دوران کیے گئے وعدوں کو پورا کرے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ہم مرحلہ وار انداز میں انتقال اقتدار کا عمل مکمل کرنا چاہتے ہیں۔