.

مزاحمت کاروں کے حملوں میں 22 حوثی باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں مزاحمتی کارکنوں نے صوبہ آزال میں 22 مسلح حوثی شدت پسندوں کو ہلاک اور دسیوں کو زخمی کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ مزاحمتی کارکنوں کا کہنا ہے کہ حوثیوں کو صنعاء اور عمران شہروں میں 72 گھنٹوں کے دوران تین کارروائیوں کے دوران ہلاک کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق یمن کے صوبہ آزال میں صنعا، عمران، صعدہ اور ذمار جیسی اہم گورنریاں واقع ہیں۔ صونہ آزال کے ایک مزاحمتی عہدیدار نے بتایا کہ آئینی حکومت کی بحالی کے لیے کام کرنے والے کارکنوں نے جمعرات کو صنعاء کے شمال میں ائیر پورٹ روڈ پر علی صالح اور حوثیوں کی ایک پارٹی کو نشانہ بنایا جس میں کم سے کم پانچ باغی ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔

ذرائع کے مطابق مزاحمتی کارکنوں نے شمالی صنعاء میں حوثیوں اور علی صالح کی وفادار ملیشیا کو گھات لگا کر فائرنگ سے نشانہ بنایا جس میں دشمن کو بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا۔ ذرائع نے بتایا کہ دو روز قبل بھی مغربی صنعاء میں السنینہ کالونی کی شاہراہ 24 پر حوثیوں اور علی صالح کی حامی ملیشیا کو نشانہ بنایا گیا جس میں کم سے کم 15 حوثی ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے تھے۔

صنعاء سے متصل عمران گورنری میں بھی مزاحمت کاروں نے حوثی ملیشیا کی ایک گاڑی کو نشانہ بنایا جس میں متعدد جنگجو سوار تھے۔ فائرنگ سے کم سے کم دو جنگجو ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں جب کہ گاڑی بھی تباہ ہوگئی ہے۔ آزال صوبے میں حکومت نواز مزاحمت کاروں نے حوثی باغیوں اور سابق صدر علی صالح کی وفادار ملیشیا کے دسیوں جنگجوئوں اور ان کے فوجی ساز وسامان کو نشانہ بنایا ہے جس کے نتیجے میں دشمن کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔