.

ابوظبی میں مفت کھانا کھلانے والا ہوٹل کھل گیا!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے ایک ریستوران نے خوبصورت انسانی جذبے کا اظہار کرتے ہوئے کم تنخواہ پانے والے ان مزدوروں کے لئے مفت کھانا دینے کا اعلان کیا ہے جو ریستوران سے قیمتاً کھانا خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے۔

ابوظبی کی ایک کالونی میں 'کیوی' ریستوران اور 'ملک الشاورما' نے اپنی دکان کی پیشانی پر خوش کن اعلان آویزاں کر رکھا ہے کہ "جو خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے، ان کے لئے ہمارے کھانے مفت ہیں۔"

متحدہ عرب امارات سے شائع ہونے والے انگریزی روزنامہ The National نے اس ریستوران کے بارے میں رپورٹ شائع کی ہے، ہوٹل کے مقامی مالک نے اخبار کو اپنا نام شائع نہ کرنے کی درخواست کرتے ہوئے بتایا کہ روزمرہ کے اخراجات بڑھ رہے ہیں۔ بھارت سمیت متعدد ایشیائی ملکوں کے تارکین وطن ہوٹل میں کھانا کھانے کی استطاعت نہیں رکھتے۔

ہوٹل کے اکتیس سالہ مالک نے پانچ برس قبل دبئی میں پہلا ہوٹل کھولا اور اس وقت پورے ملک میں ان کی چھ شاخیں ہیں اور تمام 'کیوی' کے نام سے ہی کام کر رہی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ سفر کے دوران پیش آنے والے تجربات میری سوچ کا محرک تھے کیونکہ میں نے دو سال میڈیا میں کام کیا اور پیشہ وارانہ ذمہ داری کے سلسلے میں سوڈان، افغانستان، شام اور اردن گیا۔ ان جگہوں پر میں بے روزگاری اور غربت دیکھی۔

ہوٹل کی منفرد بات یہ ہے کہ اس میں محتاج لوگوں کو 'ون ڈش' نہیں بلکہ من بھاتے ایک سے زائد کھانوں کا ذائقہ لینے کا موقع دیا جاتا ہے۔ ہوٹل کے 'مفت گاہکوں' میں صرف ایشیائی ہی نہیں بلکہ کئی کم تنخواہ پانے والے عرب بھی شامل ہیں۔ روزانہ کم سے کم دس غریب یہاں فری کھانا کھانے آتے ہیں۔ ہوٹل مالک زیادہ لوگوں تک فری کھانے کی پیشکش پہنچانے کے لئے پیشانی پر تحریر آفر کو کئی زبانوں میں ترجمہ کروانے کا ارادہ رکھتا ہے۔