.

سعودی گاؤں پر قبضے کا ایرانی۔حوثی منصوبہ ناکام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب اور اتحادیوں کی مشترکہ فوج نے جازان ریجن کی الحرث گورنری کے قریب القرن سرحدی گاؤں کا کنٹرول حاصل کرنے کا حوثی اور ایرانی منصوبہ دلیرانہ کارروائی کرتے ہوئے ناکام بنا دیا۔ سعودی فوج کے توپخانے نے علی عبداللہ صالح کے جنگجوؤں کو شدید نقصان پہنچایا۔ اس کارروائی میں کمانڈر سمیت 20 حوثی باغی بھی ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔

"العربیہ" کو اپنے ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ منصوبہ کا روڈ میپ ایران کے چند فوجی افسروں نے بنایا تھا اور اسے گذشتہ رات حوثی کمانڈر نے اپنے ساتھیوں کے ہمراہ عملی جامہ پہنانے کی کوشش کی۔ انہوں نے 'قریہ القرن' نامی غیر آباد علاقے پر حملہ کیا تاکہ اسے بیس کیمپ بنا کر سعودی عرب کے دیگر سرحدی علاقوں کا کنڑول حاصل کیا جا سکے۔

سعودی عرب کی سرحدی نگرانی کرنے والے محافظوں نے صورتحال کو بھانپ کر کنڑول روم کو سنگل دیا کہ علی عبداللہ صالح کی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا گاؤں کی سمت بڑھ رہی ہے۔ سعودی توپخانے نے اپاچی ہیلی کاپٹروں کی مدد سے منظم منصوبہ ناکام بنا دیا، جس میں حوثی کمانڈر اپنے باقی ساتھیوں سمیت ہلاک ہوا جبکہ ان کے ساتھ آنے والا عسکری ساز وسامان بھی تباہ ہو گیا۔