.

دمشق میں زائد المیعاد خوراک کی تقسیم :یو این کا اعتراف

'خشک خوراک کے 320 پیکٹ غلطی سے تقسیم کیے گئے'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اقوام متحدہ نے شام کے دارالحکومت دمشق کے قریب حال ہی میں زائد المیعاد خشک خوراک اور بسکٹ تقسیم کیے جانے کی غلطی تسلیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ دمشق کے نواحی علاقوں مضایا اور الزبدانی میں خوراک کے 320 پیکٹ غلطی سے مقامی شہریوں میں تقسیم کیے گئے تھے۔

العربیہ کے مطابق شام میں اقوام متحدہ کے انسانی حقوق سے متعلق رابطہ کار یعقوب الحلو نے بتایا کہ ' یو این' کی جانب سے 18 اکتوبر کو الزبدانی اور مضایا شہروں میں خوراک کے 650 پیکٹ تقسیم کیے گئے تھے۔ ان میں زیادہ تر بسکٹ کے کریٹ شامل تھے۔ مگر بعد میں معلوم ہوا کہ ان میں سے 320 کریٹوں کے استعمال کی طبی میعاد 15 ستمبر کو ختم ہو چکی تھی۔

اقوام متحدہ کے عہدیدار نے صدر بشارالاسد اور ان کی فوج سے مطالبہ کیا کہ وہ اقوام متحدہ کے طبی عملے کو کفرایا اور الفوعہ کے مقامات تک رسائی کی اجازت دیں تاکہ شہریوں کا ضروی طبی معائنہ کیا جا سکے۔

ادھر شامی نیوز نیٹ ورک نے مضایا شہر کی میونسپل کونسل کے ڈائریکٹر موسیٰ المالح کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں انہوں نے بھی کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی جانب سے دو ماہ سے ہلال احمر اور ریڈ کراس کے ذریعے غیر معیاری خوراک تقسیم کی گئی تھی۔

موسیٰ المالح کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کی زائد المیعاد خوراک نے پہلے سے مشکلات کے شکار شامی باشندوں میں مزید انسانی بحران پیدا کیا ہے کیونکہ جن علاقوں میں خوراک تقسیم کی گئی وہاں شہریوں کی طبی ضروریات کی دیکھ بھال کا کوئی انتظام نہیں ہے۔ انہوں نے بتایا کہ غیر معیاری اشیاء کھانے سے 40افراد کو اسپتالوں میں داخل کرنا پڑا ہے۔