.

مبارک کے فصلی بٹیروں کی مصری پارلیمینٹ میں واپسی

نومنتخب ارکان نیشنل پارٹی چھوڑ کر کنگز پارٹیوں میں شامل ہوئے تھے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ہونے والے حالیہ پارلیمانی انتخاب کے پہلے مرحلے کے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج سے بہت سے حلقوں کی امیدیں بر آئیں جبکہ متعدد دیگر انتہائی صدمے سے دوچار ہیں۔

پہلے مرحلے کے اب تک سامنے آنے والے نتائج میں حسنی مبارک کی کالعدم 'نیشنل پارٹی' چھوڑ کر دوسری جماعتوں کے ٹکٹ پر الیکشن لڑنے والوں کی بڑی تعداد کامیاب ہوئی ہے۔ مصر کے معزول مرد آہن حسنی مبارک کی نیشنل پارٹی [کالعدم] کو خیرباد کہہ کر دوسری جماعتوں کے ٹکٹ پر پارلیمنٹ میں اپنی سیٹیں پکی کرنے والے 84 خوش قسمت افراد کی تصدیق ہو چکی ہے۔ یہ جہاں دیدہ سیاست دان ماضی میں حسنی مبارک کے ہاتھ کی چھڑی اور جیب کی گھڑی ہوا کرتے تھے۔

عدالتی ذرائع نے 'العربیہ ڈاٹ نیٹ' کو بتایا حالیہ الیکشن میں حسنی مبارک کی نیشنل پارٹی کے سرکردہ رہنماؤں کی اسمبلی میں جیتی گئی نشتوں کا تناسب 30 فیصد بنتا ہے۔ اسی طرح کئی عشروں تک مصر کے ایوان اقتدار کے مزے لوٹنے والی نیشنل پارٹی سے تعلق رکھنے والے سابقین کے بچے اور قریبی رشتہ دار بھی دوسری جماعتوں کے ٹکٹ پر بڑی تعداد میں رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے ہیں۔

کامیابی کے اس تناسب کو دیکھتے ہوئے کہا جا سکتا ہے کہ آنے والی مصری پارلیمنٹ میں کالعدم نیشنل پارٹی ہی کے جیالے اکثریت میں نظر آئیں گے اگرچہ ان سب سے سیاسی یو ٹرن لیتے ہوئے حسنی مبارک اور ان کی جماعت کو خیرباد کہہ دیا اور متعدد کنگز پارٹیوں میں اپنے سیاسی مستقبل کو محفوظ بنانے میں عافیت جانی۔