.

''شام میں جنگ کی قیادت ایران کے ہاتھ میں ہے''

دشمن شام کے بعد عراق اور ایران کو بھی تباہ کرنا چاہتا ہے: رحیم صفوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

#ایران کے رہ براعلیٰ آیت اللہ علی #خامنہ_ای کے مشیر برائے عسکری امور جنر یحییٰ #رحیم_صفوی نے کہا ہے کہ #شام میں جاری جنگ کی قیادت ایران کے ہاتھ میں ہے۔ لڑائی میں ایرانی #پاسداران_انقلاب کی شمولیت نہایت اہمیت کی حامل ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق میجر جنرل صفوی نے ان خیالات کا اظہار شام کے #حلب شہر میں پچھلے ماہ باغیوں کے حملے میں ہلاک ہونے والے جنرل #حسین_ھمدانی کے اہل خانہ سے ملاقات کے دوران کیا۔

فارس نیوز ایجنسی کے مطابق جنرل رحیم صفوی نے اعتراف کیا کہ #بشار_الاسد کی حکومت بچانے کے لیے ایران نے شام میں دشمنوں کے خلاف عالمی اسلامی محاذ تشکیل دیا۔ ان کا اشارہ #روس کی شام میں فوجی مداخلت، پاسداران انقلاب کے فوجیوں، افغان اور پاکستانی رضاکاروں اور حزب اللہ کے جنگجوئوں کی جانب تھا جو پچھلے کئی سال سے صدر بشارالاسد کی فوج کے شانہ بہ شانہ لڑ رہے ہیں۔

ایرانی سپریم لیڈر کے مشیر کا کہنا تھا کہ ہمارے دشمن صدر بشار الاسد کی حکومت کو گرانے کے بعد لبنانی حزب اللہ، عراق اور اس کے بعد ایران کو بھی تباہ وبرباد کرنے کی منصوبہ بندی کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شام میں پانچ سال سے جاری لڑائی میں ہم نے اپنے جوانوں اور افسروں کی قربانیاں دے کر فتح کو یقینی بنایا ہے۔ پچھلے پانچ برسوں میں ایرانی فوج اور غیر سرکاری ملیشیا کے 400 اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔

ایرانی عہدیدار کا یہ بیان کہ شام کی جنگ کی قیادت تہران کے ہاتھ میں ہے نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ کیونکہ ایران مسلسل یہ دعویٰ کرتا رہا ہے کہ اس کی فوج شام میں محاذ جنگ میں حصہ نہیں لے رہی بلکہ صرف دمشق کو عسکری مشاورت کی حد تک مدد کررہی ہے۔