.

تیونس نے لیبیا کے ساتھ اپنی سرحد سیل کر دی

سوشل میڈیا کی بھی کڑی نگرانی شروع کر دی گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیونس نے دہشت گردی کے ایک تازہ واقعے کے بعد پڑوسی ملک لیبیا سے متصل اپنی سرحد سیل کرتے ہوئے سوشل میڈیا کی کڑی نگرانی شروع کی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کو اپنے ذریعے سے اطلاع ملی ہے کہ تیونس کی نیشنل سیکیورٹی کونسل کے گذشتہ روز قصر قرطاج میں صدر الباجی قائد السبسی کے زیر صدارت ہوئے اجلاس میں لیبیا سے متصل سرحد کو 15 دن کے لیے سیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

یہ فیصلہ منگل کے روز ری پبلیکن گارڈز کی ایک بس پر دہشت گردی کے حملے میں 12 اہلکارں کی ہلاکت اور 20 کے زخمی ہونے کے واقعے کےبعد کیا گیا۔

اجلاس میں سوشل میڈیا کی کڑی نگرانی کرنے اور دہشت گردوں کے زیراستعمال سوشل میڈیا کے اکاؤنٹس بند کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔ اس کے علاوہ شام، عراق اور لیبیا سے واپس آنے والے لوگوں کی بھی سخت نگرانی کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں طے کیا گیا کہ تیونس میں مقیم غیر ملکیوں کے ڈیٹا کے بارے میں بھی چھان بین کی جائے گی اور ملک کی بحری اور بری سرحدوں پر سیکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کے ساتھ ہنگامی حالت کے تحت کارروائیاں کی جائیں۔