.

اماراتی کمپنی کا ڈونلڈ ٹرمپ کے بائیکاٹ کا اعلان

ٹرمپ کے متنازع بیانات پر پوری دنیا میں شدید ردعمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

#امریکا میں #ری_پبلیکن پارٹی کے ایک متنازع رہ نما اور پیش آئند سال ہونے والے صدارتی انتخابات میں شامل ہونے کے لیے کوشاں معروف کاروباری شخصیت #ڈونلڈ_ٹرمپ نے مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز مہم چلا کر اپنے خلاف تنقید اورمخالفت کا بند نہ ہونے والا دروازہ کھول دیا ہے۔ مسلمانوں کے خلاف نفرت پر مبنی بیانات کے بعد نہ صرف عالمی سطح پر ٹرمپ کے اشتعال انگیز بیانات کی شدید مذمت جاری ہے بلکہ بعض کاروباری اداروں نے ان کا بائیکاٹ بھی شروع کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ڈونلڈ ٹرمپ کے بائیکاٹ کا اعلان کرنے والی فرموں میں #متحدہ_عرب_امارات کی ’ریٹیل بزنس‘ کی ایک بڑی کمپنی ’لینڈ مارک‘ پیش پیش ہے۔ کمپنی کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ نے امریکا میں مسلمانوں کے داخلے پر پابندی کا مطالبہ کرکے کروڑوں مسلمانوں کی دل آزاری کی ہے۔ اس لیے کمپنی نے ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ تجارتی معاہدے ختم کرتے ہوئے اپنی مصنوعات واپس لینے کا فیصلہ کیا ہے۔

خیال رہے کہ لینڈ مارک اور ڈونلڈ ٹرمپ کی ہوم مارکس انٹرنیشنل کے درمیان طے پائے معاہدے کے تحت دنیا کے مختلف ملکوں میں مشترکہ مراکز موجود ہیں۔ اس کے علاوہ لینڈ مارک گروپ کے زیراہتمام کویت، متحدہ عرب امارات، سعودی عرب اور قطر میں بھی کئی شاپنگ مال قائم کیے گئے ہیں جن میں ڈیکوریشن لائیٹس، شیشوں، جیولری اور دیگر اشیاء فروخت کے لیے پیش کی جاتی ہیں۔

کمپنی کے ایکزیکٹو ڈائریکٹر سچین مندوا نے اپنے ایک ای میل بیان میں کہا ہے کہ امریکی صدرارتی امیدوار بننے کے لیے کوشاں ڈونلڈ ٹرامپ کے متنازع بیان اور ان کی مسلمانوں کے خلاف مسلسل زہرافشانی کے بعد کمپنی نے ان کے ساتھ ہر قسم کی کاروباری شراکت معطل کردی ہے تاہم اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی گئی۔

لائف اسٹائل کے مشرق وسطیٰ سے باہر پاکستان، یمن ،لیبیا اور تنزانیا میں بھی کاروباری مراکز موجود ہیں۔