ترکی:جنوب مشرقی علاقے میں جھڑپیں،7 افراد ہلاک، کرفیو نافذ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ترکی کے کرد اکثریتی جنوب مشرقی علاقے میں سکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپوں میں سات افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔حکام نے اس علاقے میں تشدد کے واقعات کے بعد کرفیو نافذ کردیا ہے۔

جنوب مشرقی شہر دیاربکر میں سکیورٹی فورسز کے کریک ڈاؤن کے خلاف احتجاج کرنے والے افراد کی سوموار کے روز پولیس کے ساتھ جھڑپیں ہوئی ہیں جن میں دو افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

ایک اور جنوب مشرقی صوبے مردین کے ضلع دارجچیت میں ترک سکیورٹی فورسز کی کارروائی میں پانچ کرد جنگجو مارے گئے ہیں۔ترک حکام نے دیاربکر اور مردین کے علاقے میں جولائی میں کرد باغیوں کے ساتھ جنگ بندی کے خاتمے کے بعد سے وقفےو قفے سے کرفیو نافذ کر رکھا ہے۔

پولیس بکتربند گاڑیوں کے ساتھ دیاربکر کی شاہراہوں پر گشت کررہی ہے۔شہر کے علاقے سور میں گذشتہ دو ہفتوں سے مسلسل کرفیو کے نفاذ کے خلاف کردنواز پیپلز ڈیمو کریٹک کی اپیل پر سیکڑوں افراد نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے۔پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے اشک آور گیس کے گولے پھینکے ہیں اور ان پر پانی پھینکا ہے جواب میں مظاہرین نے پولیس کی جانب پتھراؤ کیا ہے۔

شہر میں حکومت نے احتجاجی مظاہرے پر پابندی لگا رکھی تھی لیکن اس کے باوجود لوگوں نے سڑکوں پر آ کر احتجاج کیا ہے۔دکان داروں نے اپنی دکانیں بند رکھی ہیں،سڑکوں پر چند ایک بسیں نظر آرہی تھیں اور اسکولوں میں بھی طلبہ کی حاضری کم رہی تھی۔

شام اور عراق کی سرحد کے نزدیک واقع ترک صوبے سرناک کے گورنر نے دو قصبوں چیزر اور سیلوپی میں سوموار کی شب سے رات کا کرفیو نافذ کردیا ہے۔عینی شاہدین کے مطابق ان دونوں قصبوں کے داخلی دروازوں پر پولیس کی بھاری نفری تعینات ہے۔

گورنر کے دفتر کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ''دونوں قصبوں میں علاحدگی پسند گروپوں کے ارکان کو الگ تھلگ کرنے اور بارود سے بھری خندقوں کی صفائی کے لیے کرفیو نافذ کیا گیا ہے تاکہ امن عامہ کو بحال کیا جاسکے''۔

شام کی سرحد کے نزدیک واقع ایک اور ترک قصبے نصیبین میں بھی کرفیو نافذ کردیا گیا ہے۔ترکی کی ہیومن رائٹس فاؤنڈیشن کے فراہم کردہ اعداد وشمار کے مطابق اگست کے وسط کے بعد سے ترکی کے سات صوبوں میں وقفے وقفے سے باون مرتبہ کرفیو نافذ کیا جاچکا ہے۔ان کرفیو سے متاثرہ علاقوں میں تیرہ لاکھ سے زیادہ افراد رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں