.

ترکی: داعش کے 11 جنگجو حملے کی سازش پر گرفتار

گرفتار شامیوں پر استنبول میں امریکی قونصل خانے پر حملے کی سازش کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی میں سکیورٹی فورسز نے استنبول میں امریکی قونصل خانے پر حملے کی منصوبہ بندی کے شُبے میں داعش سے وابستہ گیارہ مزید مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

ترکی کی دوغان خبررساں ایجنسی کی اطلاع کے مطابق گرفتار کیے گئے یہ تمام افراد شامی ہیں اور وہ جعلی پاسپورٹس پر ترکی آئے تھے۔ان میں ان کا رنگ لیڈر بھی شامل ہے۔اس کی عمر اٹھارہ سال ہے اور اس کا نام عبدالعزیز امین مجبل بتایا گیا ہے۔انھیں جمعہ کو علی الصباح استنبول سے چھاپہ مار کارروائی کے دوران گرفتار کیا گیا ہے۔

قبل ازیں اسی ہفتے کے دوران ترکی کی سکیورٹی فورسز نے داعش کے ایک مبینہ رکن کو استنبول میں امریکی قونصل خانے پر خودکش بم حملے کی منصوبہ بندی کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔

اس حملے سے متعلق انٹیلی جنس معلومات کے بعد امریکی قونصل خانے کو 9 دسمبر کو جزوی طور پر بند کردیا گیا تھا۔اس وقت قونصل خانہ اپنے محدود عملے کے ساتھ صرف مخصوص خدمات مہیا کررہا ہے۔

جولائی کے بعد ترکی کے شام کے ساتھ واقع سرحدی علاقے اور دارالحکومت انقرہ میں تین خودکش بم دھماکوں کے بعد استنبول میں سکیورٹی ہائی الرٹ ہے اور ترک فورسز ملک کے جنوب مشرقی علاقے میں کرد باغیوں کے علاوہ کمین گاہوں میں چھپے ہوئے داعش کے جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کررہی ہیں۔