ترک فوج کی کرد باغیوں کے خلاف کارروائی میں 102 ہلاکتیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی کے جنوب مشرقی علاقے میں فوج کی گذشتہ پانچ روز سے کرد باغیوں کے خلاف جاری کارروائی میں ہلاکتوں کی تعداد بڑھ کر ایک سو دو ہوگئی ہے۔

ترکی کے سکیورٹی ذرائع کے مطابق کرد باغیوں کے ساتھ جھڑپوں کے دوران دو فوجی اور پانچ شہری بھی مارے گئے ہیں۔ہفتے کے روز ترک فوج نے کارروائی میں ہلاکتوں کی تعداد ستر بتائی تھی اور کہا تھا کہ تمام مہلوکین علاحدگی پسند باغی جماعت کردستان ورکرز پارٹی ( پی کے کے) کے مشتبہ ارکان ہیں۔

مقامی میڈیا کے مطابق ترکی کے جنوب مشرق میں واقع شہروں میں قریباً دس ہزار فوجی پی کے کے کے جنگجوؤں اور نوجوان حامیوں کے خلاف کارروائی کررہے ہیں۔

ترک فوج نے بدھ کے روز جنوب مشرقی صوبے سرناک میں واقع شہروں چیزر اور سلوپی اور علاقے کے سب سے بڑے شہر دیاربکر میں کرد باغیوں کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا۔

جمعہ کے روز ترک فوج نے سرحد پار شمالی عراق میں بھی کرد باغیوں کی خفیہ کمین گاہوں اور اسلحے کے ڈپوؤں کو فضائی حملوں میں نشانہ بنایا تھا۔شمالی عراق کے پہاڑی علاقوں میں کرد باغیوں نے اپنے ٹھکانوں بنا رکھے ہیں اور وہ وہیں سے سرحد پار آتے جاتے اور ترکی کے جنوب مشرقی صوبوں میں حملے کرتے رہتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں