.

سعودی عرب نے یمن سے آنے والا میزائل مار گرایا

یمنی علاقے سے چلایا گیا میزائل سعودی شہر جیزان کی جانب آرہا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے میزائل دفاعی نظام نے یمن کی جانب سے آنے والے ایک بیلسٹک میزائل کو مارگرایا ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری خبررساں ایجنسی ایس پی اے نے عرب اتحاد کے ترجمان کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ سوموار کی شب چلائے گئے اس میزائل کا رُخ سعودی عرب کے شہر جیزان کی جانب تھا اور اس کو فضائی دفاعی نظام کے ذریعے ناکارہ کردیا گیا ہے۔

یمن کے حوثی باغیوں کا کہنا ہے کہ سابق صدر علی عبداللہ صالح کی وفادار فوج نے گذشتہ دو روز کے دوران سعودی عرب اور یمن میں سعودی قیادت میں اتحاد کے زیر قبضہ علاقوں کی جانب چھے میزائل فائر کیے ہیں۔

علی صالح کی وفادار فوج نے یمن کے متحارب فریقوں کے درمیان جنگ بندی کے اعلان کے باوجود یہ میزائل چلائے ہیں۔یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان 15 دسمبر سے سات روز کے لیے فائر بندی ہوئی تھی لیکن اس کے باوجود مختلف علاقوں میں فریقین کے درمیان جھڑپیں جاری رہی ہیں۔

اقوام متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی ایلچی اسماعیل ولد شیخ احمد نے جنگ بندی کی پاسداری کے لیے ایک میکانزم بھی وضع کررکھا ہے۔فریقین کے درمیان گذشتہ ہفتے سوئٹزر لینڈ میں مذاکرات ہوئے تھے اور اب 14 جنوری کو اقوام متحدہ کی ثالثی میں مذاکرات کا آیندہ دور ہوگا۔