.

سعودی عرب نے یمن سے آنے والا ایک اور میزائل مار گرایا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی فضائی دفاعی افواج نے یمن کی جانب سے آنے والے ایک اسکڈ میزائل کو مارگرایا ہے۔

سعودی عرب کی جانب سے اتوار کو جاری کردہ ایک بیان کے مطابق ''سعودی عرب کی فضائیہ نے ہفتے کی رات گیارہ بجے کے قریب صنعا سے چلائے گئے ایک اسکڈ میزائل کو مار گرایا ہے۔اس کا رُخ نجران شہر کی جانب تھا اور فضائیہ نے فوری طور پر راکٹ لانچ پلیٹ فارم کو تباہ کردیا ہے''۔

یمن میں حوثی باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں سے پہلے بھی سعودی عرب کی جانب اسکڈ اور بیلسٹک میزائل فائر کیے جاچکے ہیں لیکن ان سے کسی قسم کا کوئی نقصان نہیں ہوا تھا۔گذشتہ سوموار کو ایک بیلسٹک میزائل سعودی عرب کے شہر جازان کی جانب فائر کیا گیا تھا اور اس کو بھی سعودی عرب کے فضائی دفاعی نظام کے ذریعے ناکارہ کردیا گیا تھا۔

یمن کے حوثی باغیوں نے اس حملے کے بعد کہا تھا کہ سابق صدر علی عبداللہ صالح کی وفادار فوج نے گذشتہ دو روز کے دوران سعودی عرب اور یمن میں عرب اتحاد کے زیر قبضہ علاقوں کی جانب چھے میزائل فائر کیے تھے۔

یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز اور حوثی باغیوں کے درمیان 15 دسمبر سے جنگ بندی جاری ہے لیکن اس کے باوجود مختلف علاقوں میں فریقین کے درمیان جھڑپیں ہو رہی ہیں۔ یمن کے متحارب فریقوں کے مذاکرات کا پہلا دور سوئٹزرلینڈ میں ہوا تھا اور ان کے درمیان 14 جنوری کو مذاکرات کا دوسرا دور ہوگا۔

سعودی عرب کی قیادت میں عرب اتحاد کے لڑاکا طیارے مارچ سے یمن میں حوثی شیعہ باغیوں کے ٹھکانوں پر فضائی حملے کررہے ہیں جبکہ یمن کے شمالی علاقے میں موجود حوثی باغی سرحد پار سعودی آبادی اور سکیورٹی فورسز کی جانب گولہ باری کرتے رہتے ہیں۔یمن میں جاری لڑائی میں چھے ہزار سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔