جرمنی : مہاجر بچوں کی تعلیم کے لیے 8500 اساتذہ کی بھرتی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جرمنی میں مقیم تارکین وطن اور مہاجرین کے بچوں کی تعلیم وتدریس کے لیے حکومت نے ساڑھے آٹھ ہزار نئے اساتذہ بھرتی کیے ہیں۔

جرمن اخبار ڈائی ویلٹ نے اتوار کو شائع شدہ ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ ''جنگ زدہ اور غربت کا شکار ممالک سے قریباً ایک لاکھ چھیانوے ہزار بچے اپنے والدین کے ہمراہ جرمنی میں آئے ہیں اور جرمن اسکولوں میں داخل ہوئے ہیں۔ان کے لیے 8264 خصوصی کلاسیں شروع کی گئی ہیں''۔

اخبار نے جرمنی کی سولہ وفاقی ریاستوں میں کیے گئے ایک سروے کے اعداد وشمار کے حوالے سے لکھا ہے ملک بھر میں قریباً ساڑھے آٹھ ہزار اضافی اساتذہ کو بھرتی کیا گیا ہے۔

جرمن ایجوکیشن اتھارٹی کے مطابق دنیا کے دوسرے ممالک سے 2015ء کے دوران سوا تین لاکھ اسکول جانے کی عمر کے بچے اپنے والدین کے ہمراہ جرمنی میں پہنچے ہیں۔جرمنی کو 31 دسمبر تک دس لاکھ سے زیادہ پناہ گزینوں اور تارکینِ وطن کی آمد متوقع تھی۔یہ تعداد سال 2014ء سے پانچ گنا زیادہ ہے اور اتنی زیادہ تعداد میں پناہ گزینوں کی آمد کے پیش نظر جرمن حکومت کے لیے ان تمام کو بنیادی خدمات ،تعلیم اور صحت کی سہولتیں مہیا کرنا مشکل ہورہا ہے۔

ایجوکیشن اتھارٹی کے سربراہ برن ہیلڈ کرتھ نے اخبار ڈائی ویلٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ''اسکولز اور ایجوکیشن انتظامیہ کو پہلے کبھی اس طرح کے چیلنج کا سامنا نہیں ہوا ہے۔ہمیں یہ بات تسلیم کرنی چاہیے کہ اس طرح کی غیرمعمولی صورت حال آنے والے وقت میں ایک قدر بن جائے گی''۔

جرمن اساتذہ کی یونین کے سربراہ ہینز پیٹر میڈنگر کا کہنا ہے کہ ''ملک کو نئے آنے والے بچوں کی تعلیمی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے بیس ہزار اضافی اساتذہ درکار ہیں اور آیندہ موسم گرما تک ہمیں اساتذہ کی کمی کی یہ خلیج واضح طور پر محسوس ہوگی''۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں