بیلجیئم :حملوں کی سازش کے الزام میں دو مشتبہ افراد گرفتار

برسلز میں کارروائی کے دوران فوجی وردیاں اور داعش کا پروپیگنڈا مواد برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بیلجیئم میں حکام نے دارالحکومت برسلز میں چھٹیوں کے دوران حملوں کی مبیّنہ سازش کے الزام میں دو مشتبہ افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

پراسیکیوٹر کے دفتر نے منگل کے روز ابتدائی تحقیقات کے حوالے سے بتایا ہے کہ ''حملوں کا خطرہ سنجیدہ تھا اور اختتام سال پر چھٹیوں کے دوران برسلز میں مختلف مقامات کو نشانہ بنایا جانا تھا''۔

بیان کے مطابق ان دونوں مشتبہ افراد کو اتوار اور سوموار کو برسلز کے علاقوں لیج اور فلیمش برابانٹ میں چھاپہ مار کارروائیوں کے دوران پکڑا گیا ہے لیکن اس میں یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ دونوں مشتبہ مرد ہیں یا عورت۔

ایک گرفتار شخص پر دہشت گرد گروپ کا لیڈر اور بھرتی کنندہ ہونے کے شُبے میں فرد الزام عاید کی گئی ہے۔یہ گروپ دہشت گردی کی کارروائیوں کی منصوبہ بندی کررہا تھا۔دوسرے پر دہشت گرد گروپ کی سرگرمیوں میں مرکزی کردار ہونے یا معاون کردار ادا کرنے کے شُبے میں فرد الزام عاید کی گئی ہے۔

مشتبہ افراد کے ٹھکانوں سے چھاپہ مار کارروائی کے دوران فوجی وردیاں ،داعش کا پروپیگنڈا مواد اور کمپیوٹرز پر محفوظ کیا گیا مواد ملا ہے۔اب ان کا جائزہ لیا جارہا ہے۔البتہ ان کے قبضے سے کوئی ہتھیار یا دھماکا خیز مواد برآمد نہیں ہوا ہے۔حکام نے کل چھے مشتبہ افراد کو حراست میں لیا تھا لیکن ان میں سے چار کو پوچھ تاچھ کے بعد رہا کردیا گیا ہے۔

پراسیکیوٹر کے دفتر کا کہنا ہے کہ ان گرفتاریوں کے حوالے سے مزید کوئی تفصیل جاری نہیں کی جائے گی۔البتہ اس نے واضح کیا ہے کہ ان تحقیقات کا فرانس کے دارالحکومت پیرس میں 13 نومبر کو حملوں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ان حملوں میں ملوّث رنگ لیڈر عبدالحمید اباعود اور مفرور صلاح عبدالسلام کا تعلق بیلجیئم سے ہی تھا۔

پیرس میں چھے مختلف مقامات پر خودکش بم حملوں اور مسلح افراد کی فائرنگ سے ایک سو تیس افراد ہلاک اور تین سو سے زیادہ زخمی ہوگئے تھے۔دہشت گردی کے اس واقعے کے بعد برسلز میں سکیورٹی زیادہ سے زیادہ چار کی سطح پر ہائی الرٹ کردی گئی تھی۔اس کا یہ مطلب ہے کہ دہشت گردی کا امکان ہے۔باقی ملک میں سکیورٹی الرٹ تین کی سطح پر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں