.

افغانستان : مزار شریف میں بھارتی قونصل خانے پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افغانستان کے شمالی شہر مزارشریف میں نامعلوم مسلح افراد نے بھارت کے قونصل خانے پر حملہ کیا ہے اور اس کے اندر داخل ہونے کی کوشش کی ہے۔

بھارتی قونصل خانے کے ایک عہدے دار نے ٹیلی فون کے ذریعے اس حملے کی اطلاع دی ہے۔وہ قونصل خانے کےاندر موجود ہیں۔انھوں نے بتایا ہے کہ ہم پر ہوا ہے اور اس وقت لڑائی جاری ہے۔ان کے بہ قول قونصل خانے کا عملہ عمارت کے محفوظ حصے میں موجود ہے اور اس کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ہے۔

مقامی پولیس کے ترجمان نے بتایا ہے کہ سکیورٹی اہلکاروں نے علاقے کا محاصرہ کر لیا ہے اور وہاں سے وقفے وقفے سے فائرنگ کی آوازیں سنائی دے رہے ہیں۔اس سے پہلے پے درپے دھماکوں کی آوازیں بھی سنائی دی تھیں۔فوری طور پر کسی گروپ نے اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے اور نہ ہلاکتوں کے بارے میں پتا چل سکا ہے۔

ادھر نئی دہلی میں بھارت کی خارجہ امور کی وزارت کے ترجمان وقاص سوارپ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ حملے میں کسی بھارتی کے ہلاک یا زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ملی ہے۔

مزار شریف میں بھارتی قونصل خانے پر یہ حملہ ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب پاکستان اور بھارت افغان حکومت اور طالبان مزاحمت کاروں کے درمیان سلسلہ جنبانی دوبارہ شروع کرانے کے لیے کوشاں ہیں۔حال ہی میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی اور پاکستان کے آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے افغانستان کا دورہ کیا ہے۔انھوں نے افغان صدراشرف غنی کے ساتھ بات چیت میں طالبان کے ساتھ مذاکرات کی بحالی کے لیے کوششوں پر تبادلہ خیال کیا تھا۔