.

بحرین میں ایران سے وابستہ دہشت گردی کا سیل پکڑا گیا

دہشت گردی نیٹ ورک میں شامل 6 مشتبہ افراد گرفتار، ساتواں ایران بھاگ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بحرین میں حکام نے مبینہ طور پر ایران کے پاسداران انقلاب اور لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ سے وابستہ دہشت گردی کے ایک سیل کو پکڑ لیا ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق بحرین کی وزارت داخلہ کے حکام نے اس دہشت گردی سیل سے وابستہ چھے مشتبہ افراد کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ ساتواں مبینہ طور پر ایران بھاگ چکا ہے۔اس سیل کی قیادت دو بھائی علی فخراوی اور محمد فخراوی کررہے تھے۔

بحرین کی سرکاری خبررساں ایجنسی کے مطابق یہ دونوں بھائی ''قروب البستہ'' نامی ایک گروپ کے ارکان ہیں۔یہ گروپ 28 جولائی 2015ء کو حملہ کرنے والے دہشت گردی کے ایک نیٹ ورک کے ساتھ وابستہ ہے۔

علی فخراوی سنہ 2011ء میں ایران گیا تھا اور وہاں سے اس نے بحرین میں دہشت گردی کے نیٹ ورک کے لیے لاجسٹیک امداد اوررقوم کا بندوبست کیا تھا۔

بحرین میں دہشت گردی کے اس نیٹ ورک کو منامہ سے ایرانی سفیر کی بے دخلی کے دو روز بعد پکڑا گیا ہے۔بحرین نے تہران میں سعودی سفارت خانے اور مشہد میں قونصل خانے پر ایرانی مظاہرین کے حملوں کے بعد سوموار کو ایران کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کر لیے ہیں۔ایرانی مظاہرین نے یہ حملہ گذشتہ ہفتے کے روز سعودی عرب میں ایک شیعہ مبلغ نمر النمر کا بغاوت اور دہشت گردی کو شہ دینے کے جرم میں سرقلم کیے جانے کے بعد کیا تھا۔