.

فرانسیسی صدر کی پیرس کی جامع مسجد الکبیر آمد

قومی یکجہتی کے لئے مسلمانوں کی کوششوں کی تعریف کی، چائے بھی پی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے صدر فرانسو اولاند نے اتوار کو دارالحکومت پیرس کی بڑی مسجد جامع الکبیر میں دہشت گردی سے متاثرہ شہریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے حوالے سے منعقدہ تقریب میں شرکت کی۔ صدر اولاند کچھ دیر مسجد میں موجود رہے جہاں انہوں نے پچھلے سال جنوری اور نومبر میں دہشت گردی کے متاثرین کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ بعد ازاں انہوں نے وہاں چائے بھی نوش کی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فرانسیسی ایوان صدر کے ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ صدر اولاند اچانک جامع مسجد الکبیر پہنچے جہاں مسلمانوں اور دوسرے مذاہب کے شہریوں کی بڑی تعداد جمع تھی۔ صدر اولاند نے بھی چائے کا ایک کپ لیا۔ چائے پیتے ہوئے انہوں نے وہاں پرموجود شہریوں کے ساتھ امن بقائے باہمی، انسانی ہمدردی اور بھائی چارے کو فروغ دینے پر زور دیا۔

فرانس کی جامع مسجد کے علاوہ دارالحکومت پیرس کی کئی دوسری مساجد میں بھی اتوار کی تعطیل کے موقع پر دہشت گردانہ حملوں کی یاد میں لوگوں کو مساجد میں جمع ہونے کا منفرد موقع دیا گیا۔ مسلمانوں کے اس فراخدلانہ اقدام سے دوسرے مذاہب کے پیروکاروں میں ایک مثبت اور خوش گوار پیغام دیا گیا۔

جامع مسجد الکبیر آمد کے موقع پر فرانس میں قائم اسلامی کونسل کے چیئرمین دلیل ابوبکر نے صدر اولاند اور ان کے ہمراہ آنے والے وفد کا استقبال کیا۔ اس موقع پر فرانسیسی وزیر داخلہ نربار کازنوف بھی موجود تھے۔

صدر اولاند نے اپنے میزبانوں کے ساتھ خوش گوار انداز میں نصف گھنٹے تک گپ شپ لگائی۔ تعطیل کے روز مساجد کے دروازے غیر مسلموں کے لیے کھولے جانے کے اقدام کو سراہا اور فرانس میں رہنے والے تمام اقوام اور مذاہب کے شہریوں کے درمیان یکجہتی کی ضرورت پر زور دیا۔

خیال رہے کہ اتوار کو فرانس کی اسلامی مذہبی کونسل کے زیراہتمام دارالحکومت کی تمام مساجد کو غیر مسلموں کے لیے کھولا گیا گیا۔ اس موقع مسلمانوں کی جانب سے اپنے غیر مسلم بھائیوں کی تواضع کے لیے چائے کا بھی اہتمام کیا گیا تھا۔