.

ایران: قیدی تبادلہ معاہدے کے تحت صحافی سمیت چار امریکی رہا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی مقامی میڈیا کے مطابق تہران کے پبلک پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ #ایران نے #امریکا اور ایران کی دوہری شہریت رکھنے والے چار قیدیوں کو رہا کردیا ہے۔

ہفتے کے روز عباس جعفری دولت آبادی کا مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ "سپریم نیشنل سلامتی کونسل کے احکامات اور قومی مفاد کے تحت چار دوہری شہریت کے حامل ایرانیوں کو قیدیوں کے تبادلے کے ایک معاہدے کے تحت رہا کردیا گیا ہے۔"

ایرانی عدلیہ نے رہا کئے جانے والے ان چار افراد کے نام نہیں لئے ہیں۔ مگر ایران کی فارس نیوز ایجنسی کے مطابق ایرانی حکومت کی جانب سے رہا کئے جانے والے چار افراد میں واشنگٹن پوسٹ کے بیورو چیف #جیسن_رازین شامل ہیں۔

رازین کو ایران میں جاسوسی کے الزام میں حرات میں لیا گیا تھا۔ پچھلے ہفتے کے دوران العربیہ نیوز نے رپورٹ کیا تھا کہ کچھ امریکی حکام نے ایران سے قیدیوں کی رہائی کے لئے رابطہ کیا ہے۔

فارس نیوز کے مطابق رازین کے ساتھ عامر حکمت اور سعید عابدینی بھی شامل ہیں۔ حکمت ایک سابق امریکی فوجی جبکہ عابدینی ایک مسیحی مبلغ ہیں۔

ایجنسی نے چوتھے قیدی کا نام نہیں بتایا۔ امریکی محکمہ خارجہ کے ایک سینیئر عہدیدار نے ان خبروں پر کوئی موقف دینے سے گریز کیا ہے۔