.

سویڈن کا 80 ہزار پناہ گزینوں کو بے دخل کرنے کا فیصلہ

پناہ کے حصول کی درخواستیں مسترد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سویڈن کی حکومت نے اپنے ہاں پناہ لینے والے 80 ہزار افراد کو ملک سے نکالنے کا فیصلہ کیا ہے۔ سویڈش وزیرداخلہ انڈریس ایجمن کا کہنا ہے کہ ان کی حکومت نے 2015ء کے دوران جنگ زدہ ملکوں سے نقل مکانی کر کے سویڈن پہنچنے والے 80 ہزار افراد کی پناہ کی درخواستیں مسترد کر دی ہیں۔ اس کے باوجود یہ لوگ سویڈن میں مقیم ہیں۔ ان کے خلاف جلد ہی حکومت سخت کارروائی کا ارادہ رکھتی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ایک مقامی اخبار اور’’ایف وی ٹی ‘‘ ٹی وی سے بات کرتے ہوئے مسٹر ایجمن کا کہنا تھا کہ ہم سویڈن میں آنے والے تارکین وطن کا اندازہ ساٹھ ہزار لگا رہے تھے لیکن اب یہ تعداد بڑھ کر 80 ہزار تک جا پہنچی ہے۔ حکومت نے پولیس اور ایمی گریشن حکام کو ہدایت کی ہے کہ وہ پچھلے سال پہنچنے والے تمام پناہ گزینوں کے کوائف جمع کریں تاکہ انہیں ملک سے نکالنے کا پروگرام بنایا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ پناہ گزینوں کی واپسی میں کئی سال کا عرصہ بھی لگ سکتا ہے۔