.

داعش کو لیبیا میں قدم نہیں جمانے دیں گے: امریکا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر #براک_اوباما نے عہد کیا ہے کہ وہ '#داعش' کو #لیبیا میں ٹھکانہ نہیں بنانے دیں گے اور ان کا کہنا تھا کہ #امریکا ہر اس جگہ ایکشن لے گا جہاں پر کوئی واضح خطرہ موجود ہوگا۔

اوباما کا کہنا تھا "ہم دیگر اتحادیوں کے ساتھ مل کر یہ یقینی بنا رہے ہیں کہ داعش کو لیبیا میں اپنی جڑیں مضبوط کرنے سے روکنے کے لئے مواقع دیکھیں تاکہ ان سے فائدہ اٹھاتے ہوئے داعش کا قلع قمع کردیا جائے۔ ہم واضح خطرہ اور واضح آُپریشن کی جگہ دیکھتے ہوئے ہر ایکشن لیتے رہیں گے۔"

داعش نے لیبیا کے ساحلی شہر #سرت میں ہزاروں جنگجوئوں کے ساتھ اپنا ٹھکانہ قائم کررکھا ہے۔ سرت لیبیا کے سابق صدر معمر قذافی کا آبائی شہر ہے اور اس کی سٹریٹیجک اہمیت بہت زیادہ ہے کیوںکہ یہ تیل کی تنصیبات کے پاس سب سے قریبی بندرگاہ ہے۔

اوباما کا مزید کہنا تھا " پچھلے کچھ سالوں سے لیبیا کا المیہ یہ ہے کہ اس کی آبادی کافی کم ہے اور اس کے پاس تیل کی برآمد سے کافی آمدن ہوجاتی ہے۔"

سنہ 2011ء میں باغیوں اور مغربی ممالک کی فضائی مدد کے ذریعے سے معمر قذافی کی حکومت کو گرا دیا گیا تھا مگر اس کے بعد سے لیبیا میں طاقت کا توازن بگڑ گیا ہے۔ ملک میں اس وقت بھی دو متوازی حکومتیں اور پارلیمان قائم ہیں۔