.

یمن : فوجی کیمپ پر خودکش بم حملہ ،10 ریکروٹس ہلاک

داعش نے ٹویٹر پر جاری کردہ بیان میں حملے کی ذمے داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے جنوبی شہر عدن میں صدر عبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کے تحت فوج کے ایک بھرتی کیمپ پر خودکش بم حملے کے نتیجے میں دس ریکروٹس ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

یمنی حکام کے مطابق حملہ آور بمبار نے عدن کے علاقے بوریقہ میں واقع عباس کیمپ کے گیٹ پر خود کو دھماکے سے اڑایا ہے۔یہ فوجی کیمپ حال ہی میں قائم کیا گیا ہےاور وہاں نوجوانوں کی بھرتی کا عمل جاری تھا۔

سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے اس حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے اور ٹویٹر پر جاری کردہ ایک مختصر بیان میں کہا ہے کہ یہ خودکش حملہ أبو عيسى الأنصاری نامی ایک جنگجو نے کیا ہے۔

حکام کے مطابق حملے کے وقت سیکڑوں نوجوان فوجی کیمپ کے گیٹ پر جمع تھے اور وہ یمنی فوج میں شمولیت کے لیے اپنے ناموں کا اندراج کرا رہے تھے۔دھماکے کے فوری بعد زخمیوں کو ایمبولینس گاڑیوں کے ذریعے اسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ فوجیوں نے علاقے کا محاصرہ کررکھا تھا۔

گذشتہ سال جولائی میں صدر عبد ربہ منصور ہادی کی وفادار فورسز کے عدن پر دوبارہ قبضے کے بعد سے شہر متعدد بم دھماکے ہوچکے ہیں اور ان میں سے بعض حملوں میں اعلیٰ حکومتی عہدے داروں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی تھی۔ان میں سے بعض حملوں کی داعش ہی نے ذمے داری قبول کی تھی۔