.

پوپ فرانسیس کا ٹرمپ کے مسیحی عقیدے پر سوالیہ نشان؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدارتی انتخابات کی دوڑ کے سب سے متنازع امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے نقطہ نظر پر تنقید کرنے والوں میں دنیائے عیسائیت کے سواد اعظم پوپ فرانسیس بھی شامل ہو گئے ہیں۔ انہوں نے تو یہاں تک کہہ دیا ہے کہ امریکی صدارتی امیدوار ارب پتی ڈونلڈ ٹرمپ کا عیسائیت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

میکسیکو کے دورے سے روم واپسی کے دوران ہوائی جہاز میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے پوپ فرانسیس نے کہا کہ ’ جو شخص بے یارو ومدد گار لوگوں کو روکنے کے لیے دیواریں تعمیر کرنے کی باتیں کرے اس کا عیسائیت کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہو سکتا۔ انہوں نے پناہ گزینوں کی امریکا میں آمد رکنے کے لیے امریکا کی سرحدوں پر دیواریں کھڑی کرنے کی بات کرکے عیسائیت کی تعلیماتی کی نفی کی ہے‘۔

مسیحی دنیا کے سواد اعظم نے مزید کہا کہ ’انجیل میں کسی کو ووٹ دینے یا نہ دینے کی بابت کوئی بات موجود نہیں اور نہ ہی مجھے اس سے کوئی غرض ہے کہ امریکا میں کون کس کو ووٹ دے گا مگر میں اتنا ضرور کہوں گا کہ جو شخص دوسروں کو روکنے کے لیے دیواریں کھڑی کرنے کی بات کرے اس کا عیسائی مذہب سے کوئی تعلق نہیں۔

خیال رہے کہ امریکی دولت مند صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں پوپ کی جانب سے ماضی میں بھی تنقید کی جاتی رہی ہے۔ دوسری جانب ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی متعدد مواقع پر پوپ کو ہدف تنقید بنایا۔ انہوں نے پوپ کے تازہ بیان کی بھی شدید مذمت کرتے ہوئے ان کے بیان کو ’’شرمناک‘‘ قرار دیا۔

اپنے ایک سابقہ بیان میں ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ اگر میں ملک کا صدر بن گیا تو امریکا کی سرحدوں پر لگی خار دار تار کے بجائے امریکا اور میکسیکو کے درمیان دیوار تعمیر کروں گا تاکہ پناہ گزینوں کو امریکا میں داخل ہونے سے روکا جا سکے۔

ادھر ویٹیکن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پوپ اپنے عہدہ ومنصب کے تقاضوں کے مطابق سیاسی معاملات پر بات نہیں کرتے۔ ان کا تشخص مذہبی ہے اور وہ مذہب ہی کے بارے میں بات کرتے ہیں۔

خیال رہے کہ حال ہی میں پوپ فرانسیس نے اپنے دورہ میکسیکو اور ٹکساس کے دوران میکسیکو کے راستے امریکا میں داخل ہونے والے پناہ گزینوں کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا اور پناہ گزینوں سے حسن سلوک کی اپیل کی تھی۔

میکسیکو اور امریکا کی سرحد پر کھڑے ہو کر پوپ فرانسیس کا کہنا تھا کہ ’’ہم موجودہ انسانی بحران سے بے پرواہ ہرگز نہیں ہو سکتے۔ یہ ایسا انسانی بحران ہے جس نےلاکھوں افراد کو ھجرت پر مجبور کر دیا ہے۔ مہاجرین چاہے سڑکوں کے ذریعے آ رہے ہیں یا ریل گاڑیوں کے ذریعے یا پیدل چل کرپہنچ رہے ہیں۔ ان کی مدد کی جانی چاہیے۔ یہ لوگ دشوار گذار راستوں، جزیروں، صحراؤں، سنگلاخ چٹانوں اور سمندروں کی لہروں سے گذر کر پہنچ رہے ہیں۔ آج کی دنیا کا یہ سب سے بدترین المیہ ہے۔