.

تُرک پائلٹ کی سعودی فوجیوں کے ساتھ سیلفی کی غیرمعمولی پذیرائی

تصویر ترکی ۔ سعودی فوجی تعلقات کی مضبوطی کی علامت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تُرکی کے ایک ہواباز کی حال ہی میں مشترکہ فضائی مشقوں کے دوران سعودی عرب کے لڑاکا فوجیوں کے ہمراہ لی گئی ایک سیلفی نے ایک سوشل میڈیا پرغیرمعمولی پذیرائی حاصل کی ہے جس کے بعد سماجی رابطے کی ویب سائیٹس پرایک نئی بحث چھڑ چکی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حال ہی میں تُرکی کے F-16 جنگی طیارے کے ایک پائلٹ نے سعودی فوجیوں کے ہمراہ بنائی سیلفی مائیکرو بلاگنگ ویب سائیٹ’ٹوئٹر‘‘ پر پوسٹ کر دی تھی، جس کے بعد سوشل میڈیا پر جہاں اسے بڑے پیمانے پر پذیرائی ملی وہیں بعض حلقوں میں اسے تنقید کا بھی نشانہ بنایا گیا۔

ترک اخبار’حریت‘ کے مطابق پائلٹ نے یہ سیلفی اناطولیہ ریاست کے وسطی علاقے قونیہ میں ہونے والی فوجی مشقوں کے دوران اس وقت لی تھی جب سعودی عرب اور ترکی کے فضائی دستوں کی مشقیں جاری تھیں۔ بعد ازاں یہ تصوریر ترکی کے دفاعی تجزیہ نگار ’میتین گورسان‘ نے بھی سوشل میڈیا پر پوسٹ کی تھی۔ ان کا کہنا ہے کہ ایک پائلٹ کی جنگجوؤں کے ہمراہ سیلفی ریاض اور انقرہ کے درمیان گہرے تعلقات بالخصوص فوجی شعبے میں باہمی تعاون کا واضح ثبوت ہے۔

عسکری ذرائع کے مطابق 15 سے 19 فروری تک قونیہ میں جاری رہنے والی فوجی مشقوں میں سعودی عرب کے پانچ F-15 جنگی طیاروں نے حصہ لیا تھا۔ قبل ازیں سعودی محکمہ دفاع کے ترجمان میجر جنرل احمد عسیری نے اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ ان کے جنگی جہاز ترکی کے انجرلیک فوجی اڈے پر عملے کے ہمراہ تعینات کر دیے کیے گئے ہیں جو داعش مخالف عالمی اتحاد کے ضمن میں کارروائی کے لیے وہاں پہنچائے گئے ہیں۔