.

سعودی عرب :لبنان کی فوجی امداد بند کرنے کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے لبنانی عوام کی مدد جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا ہے جبکہ لبنانی فوج کے لیے تین ارب ڈالرز مالیت کا امدادی پیکج معطل کرنے کی تصدیق کردی ہے۔

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کے زیر صدارت سوموار کو کابینہ کے اجلاس میں وزارتی کونسل کی جانب سے ایک بیان پڑھا گیا ہے جس میں اس نے کہا ہے کہ لبنان کی جانب سے ایران کے دارالحکومت تہران میں سعودی سفارت خانے اور مشہد میں قونصل خانے پر مشتعل مظاہرین کے جارحانہ حملوں کی مذمت نہ کرنے پر امدادی پیکج معطل کیا جارہا ہے۔

سعودی کابینہ نے لبنان کے شیعہ جنگجو گروپ حزب اللہ کی عرب اور اسلامی ممالک کے خلاف دہشت گردی کی کارروائیوں کی بھی مذمت کی ہے۔

بیان کے مطابق سعودی عرب نے لبنان کی مستقل مدد وحمایت جاری رکھی ہے لیکن اس کے جواب میں لبنان نے ایسا موقف اختیار کیا ہے جس کا کوئی جواز نہیں بنتا تھا۔

تاہم اس کے باوجود وزارتی کونسل نے کہا ہے کہ سعودی عرب لبنان کے تمام فرقوں سے تعلق رکھنے والے عوام کی مدد جاری رکھے گا اور وہ وزیراعظم تمام سلام سمیت بعض لبنانی عہدے داروں کی جانب سے سعودی مملکت کے ساتھ اظہار یک جہتی کی تحسین کرتا ہے اور اس کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے۔