.

حوثی ملیشیا کی جازان پر راکٹ باری کا بھرپور سعودی جواب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے حوثی باغیوں اور منحرف صدر علی عبداللہ صالح کے جنگجوؤں نے جمعرات کے روز سعودی عرب کے علاقے جازان کے بعض شہروں پر راکٹ حملے کئے جنہیں سعودی عرب کی مشترکہ فوج نے ناکارہ بنا دیا۔

ادھر عرب فوجی اتحاد میں شامل لڑاکا طیاروں نے جازان کی سمت یمنی پہاڑی سلسلے پر شدید بمباری کی ہے۔

حوثی ملیشیا اورعلی عبداللہ صالح کے جنگجوؤں نے جازان کے شہر الحرث پر وقفے وفقے سے راکٹ باری کا سلسلہ جاری رکھا تاہم اس سے کسی قسم کا جانی اور مالی نقصان نہیں ہوا۔

سعودی فورسز نے یمن کے ان علاقوں کو بھرپور نشانہ بنایا جہاں سے راکٹ باری کی جا رہی تھی۔ باغی ملیشیاؤں کے خفیہ ٹھکانوں اور راکٹ لانچر سعودی فوج نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے تباہ کئے۔

عرب اتحاد میں شامل لڑاکا طیاروں نے جازان کے علاقے میں یمنی سرحد کے اندر پہاڑی سلسلے پر بمباری کی۔ جبل النظیر، المنبہ، رازح اور مرّان بمباری کا خصوصی ہدف تھے۔

سعودی وزارت داخلہ کے اعلان میں بتایا گیا ہے کہ سعودی فورس کا ایک سرحدی محافظ یمن سے داغے جانے والے راکٹ حملے کی زد میں آ کر شہید ہو گیا۔

درایں اثنا سعودی فورسز بالخصوص سرحدی محافظوں نے متعدد سمگلروں کو گرفتار کیا ہے۔ یہ افراد حشیش اور قات سمیت متعدد دیگر نوعیت کی نشہ آور اشیاء مملکت میں سمگل کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔