.

داعش نے بن غازی کار بم دھماکے کی ذمہ داری قبول کرلی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

#لیبیا کی بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ حکومت کی وفادار فورسز پر #بن_غازی میں گزشتہ روز ہونے والے کار بم حملے کی ذمہ داری انتہا پسند گروپ '#داعش' نے قبول کر لی ہے۔

لیبی فوج کے کرنل عبداللہ الصحافی نے خبررساں ایجنسی 'اے ایف پی' کو بتایا ہے کہ بن غازی کے علاقے حواری میں فورسز کو نشانہ بنایا گیا۔

داعش نے ایک آن لائن بیان میں دعوی کیا ہے" کہ لیبی حکومت کے چیف آف سٹاف جنرل خلیفہ حفتر کی فورسز کو نشانہ بنایا گیا تھا، جس میں 25 سے زائد فوجی مارے گئے ہیں۔"

جنرل حفتر کی فورسز نے اس سے قبل منگل کے روز داعش کے ایک مضبوط گڑھ کو واگزار کروایا تھا۔