.

ایرانی فوجی افسر اور 12 افغانی حلب میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی خبر رساں اداروں کے مطابق پاسداران انقلاب کا ایک لیفٹیننٹ رینک کا افسر احمد کودرزی اور اہل تشیع پر مشتمل 'فاطمیوں' نامی ملیشیا کے 12 جنگجو شامی اپوزیشن کے خلاف حلب کے شمالی مضافات میں چند روز قبل ہونے والی شدید لڑائی میں ہلاک ہوئے۔

'ابنا' نامی ایرانی خبر رساں ادارے نے بتایا کہ کودرزی نے شام میں لڑائی کے لئے خود کو انقلابی گارڈز کی جانب سے 'والنٹئیر' کیا تھا اور وہ حلب میں ہونے والی لڑائی میں مارا گیا۔ یاد رہے پاسداران انقلاب کے متعدد دیگر اہلکار بھی انہی معرکوں میں کام آئے تھے، تاہم ان کی لاشیں تادیر ایران واپس نہیں بھیجی جا سکیں۔

گزشتہ برس ستمبر میں روس کی شامی معرکے میں مداخلت کے بعد سے پاسداران انقلاب اور اس سے منسلک دیگر ملیشیاؤں کے 300سے زیادہ اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں۔

گزشتہ ہفتے ایران نے شام سے اپنی فوج واپس بلوانے کی تردید کی تھی کیونکہ اس سے قبل امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے شام میں ایرانی پاسداران انقلاب کے جنگجووں کی تعداد میں کمی کرنے سے متعلق بیان دیا تھا۔