.

اماراتی شہروں میں طوفانی بارش سے کاروبارِ زندگی درہم برہم

تعلیمی اداروں میں قبل ازوقت چھٹی ،والدین کو بچے لے جانے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات کے مختلف شہروں میں طوفانی بارش سے کاروبارِ زندگی درہم برہم ہوکر رہ گیا ہے۔ہوائی اڈوں پر پروازوں کی آمد ورفت متاثر ہوئی ہے،سڑکوں پر پانی کھڑا ہونے سے گاڑیاں پھنس کر رہ گئی ہیں اور اسکولوں کو قبل ازوقت بند کردیا گیا ہے۔

مقامی میڈیا کی اطلاع کے مطابق دبئی میں بیشتر اسکولوں کی انتظامیہ نے شدید بارش اور طوفان بادوباراں کے پیش نظر والدین کو چھٹی سے قبل ہی بلا بھیجا اور ان سے کہا کہ وہ اپنے بچوں کو خود آکر لے جائیں۔اس کے بعد اسکول بند کردیے گئے ہیں۔

دبئی اور دوسرے شہروں میں سڑکوں پر پانی کھڑا ہونے کی وجہ سے ٹریفک جام ہوگیا تھا اور بسوں کو مسافروں کو لانے اور لے جانے کے لیے روک دیا گیا۔اس وجہ سے بھی اسکولوں نے والدین کو اپنے اپنے بچوں کو ان کے تحفظ کے پیش نظر گھروں میں لے جانے کی درخواست کی تھی۔

متحدہ عرب امارات کے وزیر تعلیم نے ایک حکم نامہ جاری کیا ہے جس کے تحت کل جمعرات کو بھی اسکول بند رہیں گے۔

دبئی کے دو بین الاقوامی ہوائی اڈوں سے خراب موسم کے پیش نظر پروازوں کے روانہ ہونے میں معمولی تاخیر ہوئی ہے۔تاہم دبئی ائیر پورٹس کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ مجموعی طور پر پروازوں کی آمد ورفت پر کوئی زیادہ فرق نہیں پڑا ہے۔

ابوظبی کی ہوائی اڈے سے حکام نے تاحکم ثانی پروازوں کی آمد ورفت معطل کردی ہے۔امارات کے محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ جمعرات کو مزید بارش متوقع ہے۔واضح رہے کہ یو اے ای کا شمار دنیا کے دس خشک ترین ممالک میں ہوتا ہے۔