.

"شمال کی گرج" اختتامی فوجی پریڈ میں شاہ سلمان کی شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے شمال مشرقی شہر حفر الباطن میں ہونے والی تاریخی فوجی مشقوں "شمال کی گرج" میں شریک افواج کی جانب سے اختتامی پریڈ کا مظاہرہ کیا گیا.. اس موقع پر سعودی فرماں روا شاہ سلمان اور دیگر عرب اور اسلامی ممالک کے سربراہ موجود تھے۔

شمال کی گرج نامی فوجی مشقوں میں 20 عرب اور اسلامی ریاستوں کے علاوہ خلیجی ممالک کی مشترکہ فورس نے حصہ لیا.. جس کے نتیجے میں یہ دوسری خلیجی جنگ کے بعد خطے کی تاریخ کی سب سے بڑی مشق بن گئی۔

شمال کی گرج مشق کو تعداد اور سازوسامان کے لحاظ سے مشرق وسطیٰ کی سب سے بڑی مشق شمار کیا جارہا ہے۔ اس میں توپ خانوں، ٹینکوں اور فضائی دفاع کے نظام کے حوالے سے جدید ترین ٹکنالوجی کا مظاہرہ کیا گیا۔ علاوہ ازیں "شمال کی گرج" مشق کے ذریعے عالمی برادری کو یہ پیغام بھی پہنچ گیا کہ شریک ممالک چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے ایک صف میں کھڑے ہیں۔

سعودی چیف آف اسٹاف کا کہنا ہے کہ ان مشقوں سے جو مقاصد متوقع تھے وہ حاصل کرلیے گئے ہیں۔

شمال کی گرج مشترکہ فوجی مشقیں تھیں جن کا مقصد شریک افواج کے عناصر کی فنی اور لڑائی سے متعلق اہلیت کی سطح کو بڑھانا اور ترسیل اور اسٹریٹجک نقل حرکت کے منصوبوں پر عمل درامد کی مشق تھا۔ اس کے علاوہ خطے کے امن واستحکام کو درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے شریک ممالک کے افواج کے درمیان مشترکہ مشن کی صلاحیت پیدا کرنا شامل ہے۔