.

نماز کے دوران یمنی باغیوں کی سعودی علاقے پر راکٹ باری

علی عبداللہ صالح اور حوثیوں پر فائربندی کی تازہ خلاف ورزی کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں حوثی ملیشیا اور سابق معزول صدر علی عبداللہ صالح کے ہمنوا جنگجوؤں نے فائر بندی معاہدے کی صریح خلاف ورزی کرتے ہوئے سعودی عرب کی بین الاقوامی سرحد کی خلاف ورزی کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ یمنی علاقے سے باغیوں کی جانب سے داغے جانے والے راکٹ سعودی علاقے میں گرے جن سے متعلق عمارتوں کو نقصان پہنچا۔

سرحدی علاقوں میں فوجی کارروائیاں نہ کرنے سے متعلق فائر بندی کی خلاف ورزی کرتے ہوئے حوثی ملیشیا اور عبداللہ صالح کے جنگجوؤں نے سعودی علاقے میں رہائشی کالونیوں کو نشانہ بنایا جس سے کچھ عمارتوں کو گزند پہنچا۔

سعودی عرب کی سرحدی کورنری صامطہ کی الروحہ اور الرکوبہ کالونیوں پر متعدد راکٹ گرے، ان میں ایک راکٹ مسجد پر اس وقت لگا جب وہاں نماز جمعہ کا خطبہ جاری تھا۔ راکٹ کے شارپنل لگنے اور دھماکے سے مسجد کی کھڑکیوں کے شیشے ٹوٹ گئے، تاہم اس سے نمازی محفوظ رہے۔ مسجد کے قریب واقع دیگر عمارتوں کو بھی نقصان پہنچا۔

راکٹ گرنے کی اطلاع ملنے پر شہری دفاع کا محکمہ فوری طور پر جائے حادثہ پر پہنچا اور عملے نے علاقے کی بجلی بند کر کے دیگر احتیاطی تدابیر اٹھانا شروع کر دیں، تاہم صورتحال پر قابو کے بعد برقی رو کی فراہمی بحال کر دی گئی.

صامطہ گورنری ہی کے الجاضع گاؤں میں ایک راکٹ کھلے میدان میں گرا۔