.

ترکی : شام کی سرحد کے نزدیک داعش کے 10 جنگجو گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی کی سکیورٹی فورسز نے شام کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے میں سخت گیر گروپ داعش کے دس مشتبہ جنگجوؤں کو گرفتار کر لیا ہے۔ترک فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان میں سے ایک جنگجو نے بارودی جیکٹ پہن رکھی تھی۔

یہ تمام مشتبہ افراد غیر قانونی راستے سے ترکی میں داخل ہونے کی کوشش کررہے تھے اور اس دوران پکڑے گئے ہیں۔ترک فوج نے ایک تصویر بھی جاری کی ہے۔اس میں حکام کو دھماکا خیز مواد کو ناکارہ بناتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

داعش نے بیلجیئم کے دارالحکومت برسلز کے ہوائی اڈے اور صبح کے مصروف اوقات میں ایک میٹرو ٹرین پر خودکش بم حملوں کی ذمے داری قبول کی ہے۔ان بم دھماکوں میں چونتیس افراد ہلاک اور بیسیوں زخمی ہوگئے ہیں۔

ترکی نے داعش پر گذشتہ ہفتے کے روز استنبول میں ایک خودکش بم دھماکے کا الزام عاید کیا ہے۔اس بم دھماکے میں چار افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ترک وزیر داخلہ افکان علا کے بہ قول خودکش بمبار کا تعلق جنوبی صوبے غازیان تیپ سے تھا۔ وہ 1992ء میں پیدا ہوا تھا۔اس کا نام محمد اوزترک تھا اور وہ داعش کا رکن تھا۔