.

ترکی کا ’ایسٹر‘ کے موقع پر دہشت گرد حملوں کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک پولیس نے ایک انتباہی بیان جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ شدت پسند تنظیم دولت اسلامی ’’داعش‘‘ ایسٹر تہوار کے موقع پر یہودیوں اور عیسائیوں پر دہشت گردانہ حملے کر سکتی ہے۔ پولیس نے ملک بھر کے تمام یہودی معابد اور مسیحی برادری کے گرجا گھروں کی سخت ترین سیکیورٹی کی ہدایت کرتے ہوئے پولیس کو چوکس رہنے کا حکم دیا ہے۔

ترک پولیس کی جانب سے داعش کے ممکنہ حملوں کے حوالے سے یہ انتباہی بیان ایک ایسے وقت میں جاری کیا گیا ہے جب ترکی پہلے ہی دہشت گردی کے خوف ناک حملوں کا سامنا ہے۔ گذشتہ ہفتے کے روز استنبول کے قریب دہشت گردی کے ایک حملے میں تین اسرائیلی اور ایک ایرانی شہری ہلاک ہو گئے تھے۔ انقرہ حکومت کا دعویٰ ہےکہ اس حملے میں داعش ملوث ہے۔ گذشتہ آٹھ ماہ کے دوران ترک میں دہشت گردی کی چھ بڑی کارروائیاں کی گئی ہیں۔

پولیس نے خبردار کیاہے کہ ایسٹر کےایام میں قونصل خانوں، سفارت خانوں، عبادت گاہوں، گرجا گھروں اور انقرہ میں یہودیوں کے معابد سمیت غیرمسلموں کے مراکز پر دہشت گردی کا خطرہ ہے۔ اس لیے عوام الناس سے بھی اپیل کی جاتی ہے کہ وہ ایسٹر کے ایام میں محتاط رہیں۔