.

بشارالاسد کی قسمت کا فیصلہ شامی عوام کو کرنا چاہیے: روس

شامی صدر کے بارے میں کریملن کا موقف تبدیل نہیں ہوا ہے: وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے کہا ہے کہ کریملن کا شامی صدر بشارالاسد کے بارے میں مؤقف تبدیل نہیں ہوا ہے اور شامی عوام کو آزادانہ اور جمہوری انتخابات کے ذریعے ان کی قسمت کا فیصلہ کرنے کا حق ہونا چاہیے۔

روسی حکومت کے ایک اور اعلیٰ عہدے دار نے جمعہ کو ایک بیان میں اس امید کا اظہار کیا ہے کہ شامی حکومت کا وفد جنیوا میں حزب اختلاف کے ساتھ آیندہ امن مذاکرات کے دوران لچک کا مظاہرہ کرے گا۔

روسی حکومت کے ترجمان دمتری پیسکوف نے صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ''ہمیں امید ہے، دمشق کی مذاکرات میں شرکت تعمیری انداز میں جاری رہے گی اور ممکنہ حدود میں رہتے ہوئے ضروری لچک کا مظاہرہ کیا جائے گا''۔

ترجمان نے کہا کہ ''ان مذاکرات میں کردوں سمیت تمام فریقوں کو شریک کیا جانا چاہیے تاکہ تنازعے کا کوئی حل تلاش کیا جاسکے اور شامی خود اپنی قسمت کا فیصلہ کرنے کے قابل ہوسکیں''۔