.

یمن :حوثی ملیشیا کا حملہ، ہادی فورسز کے 13 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں اقوام متحدہ کی ثالثی میں متحارب فریقوں کے درمیان طے پانے والی جنگ بندی کے باوجود حوثی ملیشیا نے دارالحکومت صنعا کے نزدیک حکومت نواز فورسز پر حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں تیرہ جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

سکیورٹی ذرائع کے مطابق حوثی باغیوں نے دارالحکومت صنعا کے شمال مشرق میں واقع علاقے نہم میں خلیجی عرب اتحاد کے حمایت یافتہ اور صدرعبد ربہ منصور ہادی کی حکومت کے وفادارجنگجوؤں پر حملہ کیا ہے۔قبل ازیں اس علاقے میں دو ہفتے تک متحارب گروپوں کے درمیان جھڑپیں ہوتی رہی تھیں۔

یمن میں اتوار کی نصف شب سے حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان جنگ بندی جاری ہے۔ تمام متحارب فریقوں نے اس کی پاسداری کا اعلان کیا تھا مگر اس کے باوجود نہم میں بدھ سے لڑائی جاری ہے۔فوجی ذرائع نے بتایا ہے کہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیاؤں نے اس علاقے میں پہلے حملہ کیا تھا اور اس کے بعد جھڑپیں شروع ہوگئیں۔ لڑائی میں متعدد حملہ آور جنگجو بھی مارے گئے ہیں۔

گذشتہ روز نہم میں حوثی ملیشیا کے حملے میں صدر عبد ربہ منصور ہادی کا وفادار ایک سینیر افسر مارا گیا تھا اور چھے فوجی زخمی ہوگئے تھے۔صنعا کے مشرق میں جھڑپوں میں دو حکومت نواز جنگجو اور ایک باغی ہلاک ہو گیا ہے۔

ادھر یمنی فورسز کے زیر قبضہ صوبے شبوۃ میں حوثی باغیوں نے ایک گاؤں پر مارٹر گولا فائر کیا ہے جس کے نتیجے میں چھے سے دس سال کی عمر کے تین بچے مارے گئے ہیں۔