.

ہیلری کلنٹن اور جارج کلونی کے ساتھ عشائیہ، صرف 33 ہزار ڈالر میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اگر آپ کے پاس ایک عشایے پر خرچ کرنے کے لیے 30 ہزار ڈالر ہیں تو سمجھیں کہ آپ لاس اینجلس شہر میں ہالی وڈ کے معروف اداکار جارج کلونی اور ان کی لبنانی نژاد بیگم امل علم الدین کے گھر مدعو ہیں۔ جہاں یہ دونوں ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن کی انتخابی مہم کے لیے عطیات جمع کرنے کے سلسلے میں ہیلری کی حامی نامی گرامی ہستیوں اور کاروباری شخصیات کے لیے ایک عشایے کا اہتمام کررہے ہیں۔

اس طرح کی محفلیں اور تقریبات ہالی ووڈ اور وہائٹ ہاؤس کی دوڑ جیتنے والوں کے لیے کوئی نئی چیز نہیں۔ عشایے میں شرکت کرنے والے خواتین و حضرات #ہیلری_کلنٹن اور #جارج_کلونی اور ان کی بیگم کے ساتھ تصویر بھی بنوا سکیں گے۔ تاہم جہاں تک طعام میں شامل کھاونوں کی فہرست کا تعلق ہے تو وہ اتنے متاثر کن نہیں ہیں جن کے لیے ہزاروں ڈالر کی ادائیگی کی جائے۔

اس عشایے کے انتظام میں کلونی اور ان کی بیگم کے علاوہ اسرائیلی امریکی ارب پتی تاجر حاييم صبان بھی شامل ہیں جو خود کو اسرائیل کا شدید ترین حامی خیال کرتے ہیں۔ مصری نژاد صبان اور ان کی بیگم نے 2015 اور 2016 کے درمیان ہیلری کلنٹن کی انتخابی مہم کے لیے 50 لاکھ ڈالر جمع کیے۔

صبان اسرائیل اور اس کے امن کو اپنے لیے اہم ترین مسئلہ شمار کرتے ہیں۔ کچھ عرصہ قبل انہوں ہیلری کلنٹن کی جانب سے ایک پیغام ملا تھا جس میں وعدہ کیا گیا تھا کہ وہ معاشی طور اسرائیل کے بائیکاٹ کی دعوت دینے والی کسی بھی مہم کے خلاف برسرجنگ ہوں گی۔ صبان اور ان کی بیگم شیریل کے ساتھ ساتھ اس عشایے کے انتظامی امور میں فلم ڈائریکٹر اسٹیو اسپیلبرگ اور ان کی بیگم کیٹ اور "ڈریم ورلڈ اینیمیشن" کمپنی کے ڈائریکٹر جنرل جیف کیٹسنبرگ بھی شامل ہیں۔

ادھر ڈیموکریٹک امیدوار ہیلری کو ان کے حریف سینیٹر برنی سینڈرز کی انتخابی مہم کی جانب سے شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔ سینڈرز نے ان پر الزام لگایا ہے کہ انہوں نے کاروباری شخصیات اور صاحب ثروت افراد کو مال کے ذریعے سیاست میں بدعنوانی کی اجازت دے رکھی ہے اور ساتھ ہی وہ لابیز اور پریشر گروپ کے ڈکٹیشن کے سامنے سر جھکائے ہوئے ہیں۔ برنی سینڈرز کی انتخابی مہم میں عام شہریوں کے عطیات پر بھروسہ کیا گیا ہے جس کا اوسط 27 ڈالر بنتا ہے۔ اس کے باوجود سینڈرز لاکھوں ڈالر جمع کرنے میں کامیاب ہوچکے ہیں۔

جارج کلونی انسانی حقوق کے میدان میں سرگرم کارکن سمجھے جاتے ہیں۔ وہ ہالی وڈ کے سب سے معروف اداکار تھے جنہوں نے دارفور ریلیف مہم میں حصہ لیا اور سوڈان میں جنوبی علاحدگی پسندوں کی حمایت کی۔ دوسری جانب ان کی اہلیہ امل (جو کہ پیشے کے لحاظ سے وکیل ہیں) نے دنیا بھر میں انسانی حقوق کے مقدمات کی پیروی کی۔ ان مقدمات میں مصر میں "الجزيرہ" کے نمائندے کی گرفتاری سے لے کر یوکرین میں خاتون اپوزیشن رہ نما کا دفاع تک شامل ہیں۔ امل کو انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے دفاع کے حوالے سے عالم گیر شہرت حاصل ہے۔ تاہم انہوں نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی کونسل کی جانب سے 2014 میں غزہ پٹی کے شہریوں کے خلاف اسرائیل کے جنگی جرائم کے ممکنہ ارتکاب کی تحقیقات کرنے کی دعوت مسترد کر دی تھی۔

ہیلری کلنٹن، جارج کلونی اور ان کی بیگم ڈیموکریٹک امیدوار کے لیے عطیات جمع کرنے کے سلسلے میں جمعہ کی شب سان فرانسسکو شہر میں ایرانی نژاد صاحب ثروت شیروین پیشوار کے گھر پر ایک عشایے میں شرکت کریں گے۔ جہاں پہلی میز کی نشست (جس پر ہیلری، جارج اور امل براجمان ہوں گے) کی قیمت 3.5 لاکھ ڈالر تک ہے۔ اس چیز نے سینڈرز کے حامیوں میں غصے کی لہر دوڑادی ہے اور وہ پیشوار کی رہائش گاہ کے سامنے مظاہرے کا ارادہ بھی رکھتے ہیں۔

جارج کلونی نے 2011 میں اپنے گھر پر منعقدہ عشایے کی تقریب میں 1.5 کروڑ ڈالر کے عطیات جمع کرلیے تھے۔ اس تقریب میں صدر اوباما بھی اپنے عہدے کے لیے دوبارہ منتخب ہونے کی مہم کے سلسلے میں شریک ہوئے تھے۔