.

سرحدی حملے میں 140 ایتھوپیئن شہری ہلاک

فورسز کی جوابی کارروائی میں 60 شدت پسند بھی مارے گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

افریقی ملک ایتھوپیا کی سرحد پر جنوبی سوڈان سے تعلق رکھنے والے مبینہ عسکریت پسندوں نے ایک خونی حملے میں کم سے کم ڈیڑھ سو کے قریب عام شہریوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ ایتھوپیا کی سیکیورٹی فورسز حملہ آوروں کا تعاقب کر رہی ہیں اور آخری اطلاعات تک جوابی کارروائی میں 60 حملہ آور بھی ہلاک کیے گئے ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق مسلح افراد کی جانب سے ایتھوپیا کی سرحد پر یہ حملہ جمعہ کے روز صوبہ جامبیلا میں کیا گیا۔ اس صوبے میں جنوبی سوڈان میں خانہ جنگی سے فرار کے بعد 2 لاکھ 84 ہزار افراد پہلے سے پناہ بھی لیے ہوئے ہیں۔

مسلح افراد نے یہ حملہ دونوں ملکوں کی سرحد پر پھیلے جاکایا کے علاقے میں کیا جس کے نتیجے میں کم سے کم ایک سو چالیس افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ ایتھوپیا کے سیکیورٹی حکام نے حملہ آوروں کے خلاف جوابی کارروائی شروع کی ہے۔ ادیس ابابا حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ فورسز کی جوابی کارروائی میں جنوبی سوڈان سے آئے 60 مسلح حملہ آوروں کو بھی ہلاک کر دیا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ حملہ آوروں کا جنوبی سوڈان کے حامیوں اور مخالفین سے کوئی تعلق نہیں۔

خیال رہے کہ پچھلے سال جوبا حکومت نے امریکا اور اقوام متحدہ سمیت عالمی طاقتوں کے دباؤ کے بعد جنوبی سوڈان کے باغی گروپوں کے ساتھ مذاکرات کے بعد ایک امن معاہدہ کیا تھا جس کے بعد خانہ جنگی کا رک گیا تھا۔ حکومت نے مخالفین کے ساتھ معاہدے کے بعد رواں سال جنوری میں انہیں اہم وزارتیں بھی سونپ دی تھیں۔